اسرائیل امریکی خودکش ڈرون ’’ سوئچ بِلڈ 600‘‘ کا انتظار کر رہا: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل امریکہ سے جدید جنگی صلاحیتوں والا ’’ سوئچ بِلڈ 600‘‘ ڈرون حاصل کرنے کا منتظر ہے۔ اس ڈرون کا وزن 23 کلو گرام ہے۔ یہ 39 کلومیٹر کا فاصلہ طے کر سکتا ہے اور 40 منٹ تک ہوا میں اُڑ سکتا ہے۔

اس خودکش ڈرون کو جو چیز ممتاز کرتی ہے وہ یہ ہے کہ یہ گلوبل پوزیشننگ سسٹم (جی پی ایس) کا استعمال کرتے ہوئے کام کرتا ہے۔ اس سسٹم کے باعث اس کا آپریٹر اسے حرکت دیتا اور اسے ہدایات فراہم کرتا ہے۔ اس طرح فضا میں ہی یہ ڈرون ہدف کا تعین کر لیتا ہے۔ اس کے بعد یہ گر کر پھٹ جاتا اور ہدف کے ساتھ خود بھی تباہ ہوجاتا ہے۔

یہ قطعی ہدف کو نشانہ بنانے اور نقصان سے بچنے کے لیے علاقے کی ویڈیو ریکارڈنگ بھی بھیجتا ہے۔ یہ ایک پورٹیبل ڈرون ہے جسے فضا ، سمندر یا زمینی پلیٹ فارم سے لانچ کیا جا سکتا ہے۔ ایونک ویب سائٹ کے مطابق یہ ڈرون زیادہ فاصلے پر بڑے، زیادہ ٹھوس اہداف کو نشانہ بنانے کے لیے اینٹی آرمر وار ہیڈ لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

جدید سینسر

اس ڈرون میں EO/IR کلاس کے معروف اعلیٰ درستی والے سینسرز اور فلائٹ کنٹرول سسٹم موجود ہے۔ یہ سنسرز ’’سوئچ بلڈ 600 ‘‘ فائٹر کو تیزی اور آسانی سے اڑنے، ٹریک کرنے اور اقدام کرنے کے قابل بنا دیتے ہیں۔

ملٹی ٹاسکنگ

اس ڈرون کو مقررہ دفاعی پوزیشنوں سے اڑایا جائے، مربوط درستگی والی نامیاتی آگ کے ساتھ جنگی گاڑیوں سے اڑایا جائے یا فضا میں موجود ایپلی کیشنز سے یہ فیلڈ کمانڈروں کو ملٹی ڈومین آپریشنز کرنے کے قابل ملٹی مشن گولہ بارود کا نظام فراہم کرتا ہے۔

واضح رہے سات اکتوبر کو حماس کے اچانک اور حیران کن حملے کے چند گھنٹے بعد ہی اسرائیل نے امریکہ سے اس ڈرون کی فراہمی کا مطالبہ کردیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں