فلسطین اسرائیل تنازع

حماس نے شمالی غزہ کا کنٹرول کھو دیا ہے: اسرائیلی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی فوج نے ہفتے کے روز دعویٰ کیا ہے کہ حماس شمالی غزہ کا کنٹرول کھو چکی ہے، لیکن فوج کا مزید کہنا تھا کہ "حماس کو ختم کرنے میں وقت لگے گا"۔

فوج کے ترجمان ڈینیل ہاگری نے ایک ٹیلی ویژن بیان میں کہا کہ "حماس اب بے گھر ہونے والے لوگوں کو کنٹرول نہیں کرتی ہے اور وہ اس کی ہدایات کے برعکس شمالی غزہ کی پٹی سے نکل رہے ہیں"۔

انہوں نے کہا کہ فوج غزہ میں الشاطی کیمپ میں آپریشن کو مزید گہرا کر رہی ہے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ فوج الشفا ہسپتال پر حملہ نہیں کر رہی ہے۔ عام شہریوں کو وہاں سے نکلنے کی اجازت ہے۔

دو لاکھ افراد کا انخلاء

انہوں نے کہا کہ"ہر ایک کے لیے کھلے راستے ہیں جو ہسپتال چھوڑنا چاہتے ہیں، انہیں جانے کی اجازت ہے۔ ہماری فورسز اتوار کو غزہ کے الشفا ہسپتال سے شیر خوار بچوں کو نکالنے میں مدد کریں گی"۔

ایک فلسطینی خاندان اپنے بچوں کے ساتھ جنوبی غزہ کی پٹی سے نقل مکانی کرتے ہوئے
ایک فلسطینی خاندان اپنے بچوں کے ساتھ جنوبی غزہ کی پٹی سے نقل مکانی کرتے ہوئے

بتایا گیا ہے گذشتہ تین دنوں میں غزہ کی پٹی کے شمال سے جنوب کی طرف تقریباً دو لاکھ افراد بے گھر ہوئے ہیں۔

ایرانی حکم

مزید برآں فوج کے ترجمان نے وضاحت کی کہ وہ مغوی افراد کی واپسی کے لیے سب کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ "ہم ان کی بازیابی کا موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیں گے"۔

ہاگری نے کہا کہ ایرانی احکامات کے تحت حزب اللہ اسرائیل کے شمال میں علاقوں کو نشانہ بنا رہی ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ایران کے ہتھیار خطے کو تنازع میں گھسیٹ سکتے ہیں۔

یہ پیش رفت اس وقت سامنے آئی ہے جب اسرائیل نے غزہ کی پٹی پر فضائی حملوں کے متوازی طور پر اپنی زمینی دراندازی جاری رکھی ہوئی ہے۔7 اکتوبر کو عبرانی ریاست کے اندر حماس کی طرف سے کیے گئے حملے کے بعد اسرائیلی کارروائیوں میں ، 1,200 فلسطینی شہید اور 26 ہزار سے زیادہ زخمی ہوچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں