بحیرہ روم میں طیارہ گرنے سے 5 امریکی فوجی ہلاک ہو گئے

امریکی طیارہ فوجی تربیتی مشق کے دوران ایندھن بھرتے ہوئے گر کر تباہ ہوگیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی یورپی کمانڈ نے اعلان کیا کہ پانچ امریکی فوجی اس وقت ہلاک ہو گئے جب ان کا طیارہ تربیت کے دوران بحیرہ روم میں گر کر تباہ ہو گیا۔

امریکی یورپی کمانڈ نے ایک بیان میں کہا کہ ایک فوجی تربیتی مشق کے ایک حصے کے طور پر معمول کے فضائی ایندھن بھرنے کے مشن کے دوران ایک امریکی فوجی طیارہ حادثہ کا شکار ہوگیا۔ طیارہ بحیرہ روم میں گر گیا۔ اس طیارے میں پانچ فوجی اہلکار سوار تھے جو ہلاک ہوگئے۔

امریکی کمانڈ نے اس واقعے کے بارے میں ایک سابقہ بیان میں کہا تھا کہ ہم قطعی طور پر کہہ سکتے ہیں کہ طیارے کی پرواز کا تعلق صرف تربیت سے تھا اور اس میں تخریبی سرگرمی کے کوئی اشارے نہیں تھے۔ امریکی فوج نے طیارے کی قسم یا اس مقام کی وضاحت نہیں کی جہاں وہ پرواز کر رہا تھا لیکن حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد سے ہی امریکہ نے اس علاقے میں طیارہ بردار بحری جہاز تعینات کر رکھا ہے۔

7 اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر حملے کے بعد واشنگٹن نے اسرائیل کو فوجی مدد فراہم کرنے میں بڑی تیزی دکھائی ہے اور خطے میں اپنی افواج کو مضبوط کیا ہے۔ امریکہ نے طیارہ بردار بحری جہاز اور دیگر جنگی جہاز خطے میں بھیجے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں