فلسطین اسرائیل تنازع

یورپی یونین کی 'اسپتالوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے' پر حماس کی مذمت

اسرائیل سے تحمل کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یورپی یونین نے اتوار کے روز غزہ میں "ہسپتالوں اور شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے" پر حماس کی مذمت کی ہے جبکہ اسرائیل پر بھی زور دیا ہے کہ وہ شہریوں کی حفاظت کے لیے "زیادہ سے زیادہ تحمل" کا مظاہرہ کرے۔

طبی عملے کے مطابق فلسطینی انکلیو کے شمال میں اسرائیلی افواج نے ہسپتالوں کی ناکہ بندی کر رکھی ہے اور وہ بمشکل اندر موجود لوگوں کی نگہداشت کر پاتے ہیں۔ غزہ کے سب سے بڑے اور دوسرے بڑے ہسپتالوں الشفاء اور القدس نے کہا کہ وہ آپریشن معطل کر رہے تھے۔

اسرائیل نے کہا ہے کہ حماس نے ہسپتالوں کے نیچے اور اس کے قریب کمانڈ سینٹرز بنائے ہوئے ہیں اور اسے ان 200 کے قریب یرغمالیوں کو رہا کرنے کی ضرورت ہے جو عسکریت پسندوں نے صرف ایک ماہ قبل اسرائیل میں ایک حملے میں بنائے تھے۔ حماس نے ہسپتالوں کو اس طرح استعمال کرنے سے انکار کیا ہے۔

یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزپ بوریل نے 27 ممالک کے بلاک کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا، "یورپی یونین حماس کی جانب سے ہسپتالوں اور شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کی مذمت کرتی ہے۔ شہریوں کو جنگی علاقے سے نکلنے کی اجازت ملنی چاہیے۔"

اس کے ساتھ ہی بین الاقوامی انسانی قانون کے تحت ہسپتالوں، طبی سامان اور اندر موجود شہریوں کی حفاظت کی ذمہ داری پر زور دیتے ہوئے انہوں نے اسرائیل سے تقاضہ کیا کہ وہ زیادہ سے زیادہ تحمل کا مظاہرہ کرے۔

بوریل نے خبردار کیا، "یہ مظالم ہسپتالوں کو بری طرح متأثر کر رہے ہیں اور شہریوں اور طبی عملے کو ہولناک نقصان پہنچا رہے ہیں۔"

انہوں نے مزید کہا، "ہسپتالوں کو فوراً انتہائی ضروری طبی سامان فراہم کیا جائے اور جن مریضوں کو فوری طبی امداد کی ضرورت ہے، انہیں بحفاظت باہر نکالا جائے۔ اس تناظر میں ہم اسرائیل پر زور دیتے ہیں کہ وہ شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے زیادہ سے زیادہ تحمل کا مظاہرہ کرے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں