امریکی ٹی وی رپورٹر کا سپورٹس کی جعلی رپورٹنگ کا اعتراف اور معذرت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایک امریکی صحافیہ نے پیشہ ورانہ اخلاقیات میں ایک ناقابل معافی غلطی کا ارتکاب کرنے کا اعتراف کیا ہے۔اس نے امریکن فٹ بال (این ایف ایل) اسٹیڈیم میں کوچز کے بیانات لینے میں ناکامی کے بعد"من گھڑت" رپورٹس کا اعتراف کیا ہے۔

تاہم اس نے جعلی رپورٹس کی تیاری پر سوشل میڈیا پر معذرت کی ہے۔ معذرت کے باوجود اس پر سماجی حلقوں کی طرف سے تنقید کی جا رہی ہے۔

"تحریری مداخلت"

’اے ایف پی‘ کے مطابق کیریسا تھامسن نے بدھ کے روز ایک پوڈ کاسٹ میں کہا کہ "مجھے یہ کہنے پر برطرف نہیں کیا گیا تھا اور میں دوبارہ کہوں گی۔ میں نے بعض اوقات جعلی رپورٹس تیار کی تھیں "۔

اس نے کہا کہ ’میں کبھی کبھی رپورٹ بنا لیتی تھی کیونکہ کوچ ہاف ٹائم پر باہر نہیں آتے تھے اور بہت دیر ہوجاتی ۔ میں رپورٹ کو خراب نہیں کرنا چاہتی تھی‘۔

اکتالیس سالہ تھامسن (41 سال کی عمر) ایمیزون پرائم پلیٹ فارم پر کام کرنے سے پہلے فاکس اسپورٹس نیٹ ورک کے لیے فیلڈ کوریج کرنے والی ٹیلی ویژن رپورٹر تھی، جہاں وہ امریکن فٹ بال لیگ (NFL) میں جمعرات کے کھیل کے لیے تجزیاتی اسٹوڈیو کی مرکزی میزبان ہیں۔

اس کے بیانات نے کھیلوں اور صحافت کی دنیا میں بڑے پیمانے پر تنازع کو جنم دیا ہے۔ کچھ لوگوں نے کہا کہ اس کے "جعلی" بیانات کا رجحان "دوسرے صحافیوں کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کا باعث بنے گا‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں