فرانسیسی سینیٹر پر خاتون ساتھی کے ساتھ زیادتی کی کوشش کا الزام

ابتدائی الزامات میں کہا گیا جوئل گوریو نے اپنی ساتھی سینڈرین جوسو کے مشروب میں نشہ آور چیز شامل کی تھی

حقائق تصدیق ٹرینڈنگ
پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پیرس کے پبلک پراسیکیوٹر کے دفتر نے اعلان کیا ہے کہ فرانسیسی سینیٹ کے ایک رکن کے خلاف ابتدائی الزامات درج کرلیے گئے ہیں۔ الزامات کے تحت اس رکن نے سینیٹ میں اپنی ساتھی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی ہے۔

سینیٹ میں لوئر- اٹلانٹک ریجن (مغرب) کی نمائندگی کرنے والے 66 سالہ سینیٹر جوئل گیریو کو کل 48 گھنٹے کے لیے گرفتار کیا گیا۔ گیریو پر شکوک ہیں کہ اس نے اپنے اپارٹمنٹ میں شراب کے ایک کپ میں نشہ آور مادہ ڈالا تھا اور اسے سینیٹر سینڈرین جوسو کو پیش کیا تھا۔ جوسو نے خود کو بیمار محسوس کیا اور اس جگہ کو چھوڑ کر چلی گئی۔

گوریو کے وکیل نے تصدیق کی کہ گوریو کا جوسو پر حملہ کرنے کے لیے اس کو منشیات دینے کا کوئی ارادہ نہیں تھا۔ گوریو نے جوسو سے معذرت بھی کی ہے۔

وکیل نے کہا جو کچھ ہوا وہ ہینڈل کرنے میں غلطی تھی جس کی وجہ سے رکن پارلیمنٹ جوسو کو بیماری کا احساس ہوا۔ گوریو ایک عصمت دری کرنے والے نہیں بلکہ ایک ایماندار اور قابل احترام شخص ہیں۔ چاہے جتنا بھی وقت لگ جائے وہ اپنی اور اپنے خاندان کی عزت بحال کریں گے۔

واضح رہے سینیٹر گوریو کو رہا کر دیا گیا تھا لیکن وہ عدالتی نگرانی میں ہیں اور انہیں پوری تفتیش کے دوران متاثرہ خاتون اور گواہوں سے بات کرنے سے روک دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں