’مس یونیورس 2023‘ کی تاج پوشی کی تقریب میں پاکستانی اور بحرینی حسینائیں بھی جلوہ گر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اتوار کی صبح ایل سلواڈور میں مس یونیورس 2023 کی تاجپوشی کی تقریب منعقد ہوئی جہاں اس سال کی مس یونیورس کا ٹائٹل مس نیکاراگوا کی’چنیس پالاسیوس‘ نے اپنے نام کیا۔

اس تقریب کی اہم بات یہ ہےکہ اس میں شرکت کرنے والی خواتین کے رنگ، نسل ، ذات پات، عمر اور مذہب کی تفریق نہیں کی گئی اور تقریب میں تنوقع کا رنگ نمایاں تھا۔ تقریب میں پاکستانی ملکہ حسن اور بحرین کی حسینہ بھی شریک تھیں۔

یہ تقریب ماضی کے اعتبار سے راویت شکن رہی کیوںکہ اس میں بہت سی سابقہ روایتوں کوتوڑا گیا۔

23 سالہ چینس پالاسیوس اس مقابلے کےحتمی مرحلے میں منتخب ہونے کے بعد مس یونیورس کا تاج حاصل کرنے میں کامیاب ہوئیں۔ اس مقابلے میں مس آسٹریلیا، کولمبیا، پورٹو ریکو، ایل سلواڈور، فلپائن، پیرو، اسپین، وینزویلا اور تھائی لینڈ کی حسینائیں بھی شامل تھیں۔

نئی مس یونیورس ایک پریزنٹر کے طور پر کام کرتی ہیں اور انہوں نے کمیونیکیشن سائنسز میں ڈگری حاصل کی ہے۔ ٹائٹل حاصل کرنے کے بعدوہ لبنان کے معوض زیورات کے گھر کے ڈیزائن کردہ ہیرے کے تاج سے مزین تھیں۔

تنوع کا رنگ نمایاں

72 ویں مس یونیورس کے انتخاب کی تقریب میں میلے کے روایتی معیارات سے بہت سے امیدواروں کی رخصتی بھی دیکھنے میں آئی، کیونکہ اس میں 22 سالہ مس نیپال جین گیریٹ نے شرکت ریکارڈ کی جو دیگر مقابلوں کے مقابلے میں زیادہ وزنی نظر آئیں۔

ان کی شرکت کا مقصد خوبصورتی کے مقابلوں میں حصہ لینے والوں کی دقیانوسی تصویر کو چیلنج کرنا، تنوع کے تصور کی حمایت کرنا اور جسم کی ایک مثبت تصویر کو اپنانا تھا۔

اس تقریب کی ایک اہم بات یہ ہے کہ اس میں مس پاکستان ایریکا روبن برکینی میں نظر آئیں جب مقابلے میں حصہ لینی والی دیگرخواتین سوئم سوٹ میں جلوہ گر ہوئیں جب کہ مس بحرین لوجین یعقوب نے بھی پورے جسم کو ڈھانپنے والے لباس کا انتخاب کیا۔

مس کولمبیا اس تقریب میں کوارٹر فائنل تک پہنچنے والی پہلی شادی شدہ مدمقابل تھیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں