استنبول میں ڈرامائی واقعہ،زیورات کی دکان میں ریموٹ کنٹرول ڈکیتی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ کے شہر استنبول میں حال ہی میں زیورات کی دکان پر ڈکیتی کی ایک ڈرامائی واردات دیکھنے میں آئی۔ اس واردات نے ایک بڑا تنازع کھڑا کردیا۔

یہ واقعہ چوری کی منفرد واردات کا ہے جس میں چار ملزمان نے حصہ لیا۔ یہ ایک سمارٹ واردات تھی جو صرف ایک منٹ کے لیے جاری رہی۔

نقاب پوش چور سٹور میں داخل ہوئے جو جہاں انہوں نے تقریباً 7 ملین ترک لیرہ مالیت کے زیورات چوری کیے۔ امریکی کرنسی میں اس کی مالیت اڑھائی لاکھ ڈالر بتائی جاتی ہے۔

مقامی میڈیا کے ذریعے شائع ہونے والی ایک ویڈیو کلپ جسے اسٹور کے نگرانی کے کیمروں نے ریکارڈ کیا ہے میں دکھایا گیا ہے کہ چار نقاب پوش افراد ایک کنٹرول ڈیوائس کا استعمال کرتے ہوئے ریموٹ سے اسٹور کے داخلی دروازے کو کھولتے ہیں۔

چار نقاب پوش افراد ریموٹ کنٹرول کا استعمال کرتے ہوئے سٹور کا گیٹ کھولنے میں کامیاب ہو گئے، جس سے سوشل میڈیا صارفین حیران رہ گئے کہ وہ ڈیوائس کی کاپی کیسے حاصل کر سکتے ہیں۔ کیا نقاب پوش مردوں اور سٹور کے مالک کے درمیان کوئی رشتہ یا جان پہچان تھی؟!

سکیورٹی حکام چار نقاب پوش افراد کو گرفتار کرنے یا ان کی شناخت جاننے میں کامیاب نہیں ہوسکے ہیں حالانکہ اسٹور کے مالک کی جانب سے سکیورٹی سروسزمیں شکایت درج کرانے کے بعد مجرموں کو تلاش شروع کردی ہے۔

گردش کرنے والے ویڈیو کلپ میں یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ نقاب پوش افراد نے ایک چوتھائی ملین امریکی ڈالر سے زیادہ مالیت کے سونے اور ہیرے چوری کیے۔ وہ انہیں تھیلے میں ڈالنے کے بعد ایک منٹ کےاندر اندرموٹر سائیکل پر فرار ہوگئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں