افغانستان وطالبان

طالبان حکومت نے بھارت میں افغان سفارت خانہ بند کر دیا

بھارت کا سفارتی عدم تعاون اور دیگر چیلنج سفارت خانے کی بندش کا سبب بنے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی میں افغان سفارت خانہ بند کر دیا گیا ہے۔ 24 نومبر کو نئی دہلی میں افغان سفارت خانے کے داخلی راستے پر ہنگامی نمبر لکھے ہوئے ملے ۔ اس کے ساتھ ہی یہ اعلان درج تھا کہ ، آج سے سفارت خانہ نئی دہلی میں اپنی مستقل بندش کا اعلان کرتا ہے۔

افغان سفارت خانے کی اس مستقل بندش کی وجہ بھی تحریر کی گئی ہے کہ بھارت حکومت کی جانب سے سفارتی تعاون پیش نہیں کیا گیا نیز بھارتی حکومت کی طرف سے کئی چیلنج درپیش رہے۔

واضح رہے جب سے کابل میں طالبان کی حکومت قائم ہوئی ہے بہت سارے دوسرے ملکوں کی طرح بھارت نے بھی طالبان حکومت کو تسلیم نہیں کیا ہے۔ البتہ دوسرے کئی ملکوں کی طرح بھارت نے بھی افغانسان کی طالبان حکومت کو ' ڈی فیکٹو' حکومت کے طور پر لیا ہے اور اس کے ساتھ روز مرہ کے معاملات کو ڈیل کیا جارہا ہے۔

اشرف غنی حکومت کے دور کے افغان سفارت کار بھی سفارت خانہ چھوڑ کر کسی تیسرے ملک منتقل ہو چکے ہیں۔ اب صرف طالبان کے دور کے واپس آنے کے بعد سے تعینات کیے گئے سفارت کار یہاں موجود ہیں۔

لیکن بھارتی حکومت کی طرف سے طالبان کے تعینات کیے گئے سفارتکاروں کے ساتھ تعاون کرنا تو درکنار طالبان کی حکومت کو افغان سفارت خانے کا کنٹرول بھی نہیں دیا جا رہا ہے۔

اس لیے نئی دہلی میں افغان مشن یہ افسوس کے ساتھ اعلان کرتا ہے کہ اس نے اپنا کام بند کر دیا ہے۔ اس اعلان کی بعد ازاں ' ایکس ' پر بھی پوسٹ لگائی گئی ہے۔ اس سے اہک ماہ پہلے یہ اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ افغان سفارت خانے نے نئی دہلی میں اپنا کام معطل کر دیا ہے۔

دوسری جانب بھارت نے اگست 2021 میں ہی کابل سے اپنے سفارت کاروں کو واپس بلا لیا تھا، تاہم پچھلے سال ایک چھوٹی سفارتی ٹیم روز مرہ کے امور کی انجام دہی کے لیے کابل بھیج دی تھی۔

خیال رہے طالبان حکومت کا بیرون ملک درجن بھر ملکوں میں قائم سفارت خانوں پر مکمل کنٹرول ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں