غزہ میں جنگ کے خاتمے کے لیے قابل اعتماد امن منصوبے پر کام کرنا ناگزیر ہے: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان آل سعود نے پیر کے روز فلسطین کے جنگ زدہ علاقے غزہ کی تباہ کن صورتحال کے خاتمے کے لیے ایک قابل اعتماد امن منصوبے پر کام کرنے کی ضرورت پر اشد زور دیا۔

سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ تل ابیب تشدد کا مکمل ذمہ دار ہے جس نے غزہ کی پٹی پر جنگ مسلط کر رکھی ہے۔

بحیرہ روم کے ممالک کے لیے یونین کے وزرائے خارجہ کے آٹھویں علاقائی فورم سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے تنازعے کے خاتمے کے لیے دو ریاستی حل کی اہمیت پر زور دیا۔

مشترکہ عرب اسلامی سربراہی اجلاس کی طرف سے تفویض کردہ وزارتی کمیٹی کے ارکان نے پیر کے روز ہسپانوی شہر بارسلونا میں ہسپانوی وزیر خارجہ جوز مینوئل البریز سے ملاقات کی۔

سعودی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ اس ملاقات میں اردن کے وزیر خارجہ ایمن الصفدی، مصری وزیر خارجہ سامح شکری، فلسطینی ریاض المالکی، ترکیہ کے ہاکان فیدان اور عرب لیگ کے سیکرٹری جنرل احمد ابو الغیط شامل تھے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ملاقات میں غزہ کی پٹی اور اس کے گرد ونواح میں ہونے والی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ پائیدار جنگ بندی کے لیے کی جانے والی کوششوں پر تبادلہ خیال کے علاوہ قیدیوں کو رہا کر کے انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کو آگے بڑھانے پر زور دیا۔

ہسپانوی وزیر خارجہ جوز مینوئل البریز نے زور دے کر کہا کہ قابض ریاست کا کوئی بھی ردعمل بین الاقوامی قانون کے مطابق ہونا چاہیے نہ کہ ہزاروں بے گناہ شہریوں کو بلا امتیاز قتل نہیں کرنا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں