حماس کی قید میں اسرائیلی فوجیوں کے بارے میں عن قریب بات کریں گے: قطر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں عارضی جنگ بندی کی مدت میں توسیع اور جنگ بندی کے پانچویں روز قطری وزارت خارجہ کے ترجمان ماجد الانصاری نے منگل کو ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ دوحہ حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ بندی کو بدھ کے بعد پرسوں تک بڑھانے پر توجہ مرکوز کر رہا ہے۔

فوجی قیدیوں کے بارے میں جلد بات چیت شروع ہوگی

قطری عہدیدار نے زور دے کر کہا کہ جنگ بندی میں توسیع کا فیصلہ حماس کی روزانہ 10 قیدیوں کو رہا کرنے کی صلاحیت کی بنیاد پر کیا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ غزہ میں آج اور کل کے ایام میں قیدیوں کی رہائی کے بعد باقی بچ جانے والے قیدیوں کے بارے میں نہیں جانتا کہ ان کی تعداد کتنی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ غزہ میں اسرائیلی فوجی قیدیوں کے بارے میں بعد میں بات چیت ہوگی۔

یہ پیش رفت فلسطینی دھڑوں کی جانب سے قیدیوں کے معاہدے اور عارضی جنگ بندی میں مصری اور قطری کردار کی تعریف کے بعد سامنے آئی ہے۔

فلسطینی گروپوں نے مصر سے اپیل کی کہ زیادہ سے زیادہ زخمیوں کو علاج کے لیے اپنےہاں جانے کی اجازت دے۔

کل سوموار کو حماس نے قطر اور مصر کے ساتھ عارضی انسانی جنگ بندی میں توسیع کے معاہدے کی توثیق کی۔ یہ توسیع جنگ بندی کے پہلے مرحلے کی شرائط پر کی گئی تھی۔

پہلے مرحلے میں حماس نے 68 یرغمالیوں کو رہا کیا جن میں دوسرےممالک کے شہری بھی شامل تھے جب کہ پچاس اسرائیلیوں کے بدلے 150 فلسطینیوں کو اسرائیلی جیلوں سے رہا کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں