روس کیمائی ہتھییاروں کے 'واچ ڈاگ بورڈ' کی نشست جیتنے میں ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روس کیمیائی ہتھیاروں کی روک تھام کرنے والے بین الاقوامی ادارے کے فیصلہ ساز بورڈ کی سیٹ دوبارہ جیتنے میں ناکام ہو گیا ہے۔ روس کو یہ ناکامی بدھ کے روز دیکھنا پڑی ہے۔ یوکرینی صدر ولادی میر زیلنسکی نے ماسکو کی اس ناکامی کو اس کی عالمی تنہائی کا نام دے کر خوشی کا اظہار کیا ہے۔

کیمیائی ہتھیاروں کی روک تھام کے اس ادارے کے فیصلہ ساز ادارے' ایگزیکٹو کونسل ' کی تین نشستوں کے انتخاب کے لیے مشرقی یورپ کے چار ممالک مد مقابل تھے۔ تاہم روس کو اس فورم کے الیکشن میں سب سے کم ووٹ ملے ہیں۔ جس کا مطلب یہ ہے کہ پہلی بار اس ادارے میں روس کے ہاتھ کوئی نشست نہیں لگ سکی ہے۔

یوکرینی صدر نے روسی شکست پر کہا ' او پی سی ڈبلیو' ایک نیک نام اور باوقار ادارہ ہے، اس میں دہشت گردوں کے لیے جگہ نہیں ہے۔ روسی شکست یوکرین کے خلاف روسی جارحیت کا منطقی نتیجہ ہے۔'زیلنسکی نے مزید کہا ' بین الاقوامی سطح پر روسی کردار سمٹ رہا ہے اور اس تنہائی میں اضافہ ہو رہا ہے۔'

یاد رہے اس بین الاقوامی ادارے نے 2013 میں کیمیائی ہتھیاروں کے خلاف خدمات کی وجہ سے نوبل انعام دیا گیا تھا۔ ادارے نے شام کے کیمیائی ہتھیاروں کی تباہی میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں