’’نیٹو سے ملنے والے جنگی طیارے روس کے فوجیوں کے لیے جائز ہدف ہوں گے‘‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

روسی وزارت خارجہ کی ترجمان ماریا زاخارووا نے کہا ہے کہ یوکرین کو نیٹو ریاستوں کی طرف سے دیے گئے جنگی طیاروں کو گرانا ہمارا جائز ہدف ہو گا۔ جو بھی جنگی جہاز روس اور یوکرین کی لڑائی کا حصہ بنیں گے۔ اس لڑائی میں یوکرینی فوج کی طرف سے لڑنے والے جنگی جہاز جہاں بھی نظر آئیں گے، ان کو گرانا اور تباہ کرنا ہمارا حق ہوگا۔

وہ یوکرین کو نیٹو ممالک کی طرف سے ملنے والے ایف 16 طیاروں پر بات کر رہی تھیں۔

روسی خبر رساں ادارے تاس نے رپورٹ کیا ہے کہ ترجمان وزارت خارجہ نے کہا نیٹو ممالک کی طرف سے یوکرین کو دیے جانے والے جنگی طیاروں کی وجہ سے نیٹو ممالک اور روس کے درمیان براہ راست تصادم کا خطرہ بڑھے گا۔

انہوں نے کہا کہ نیٹو رکن ملک یوکرین کے تنازعے میں اپنی انوالومنٹ کو بڑھا رہے ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ یوکرین کو بچانے کے نام پر روس کو ہائبرڈ قسم کی جنگ کا سامان ہے۔

توقع کی جارہی ہے کہ نیٹو ممالک کی طرف سے یوکرین کو 2024 کے موسم بہار تک ایف 16 طیارے مل جائیں گے، یہ بات یوکرینی فضائی کے ترجمان نے بتائی ہے۔

یوکرین کو یہ توقع ہے کہ ایف 16 طیارے ملنے کے بعد روس کے مقابل اس کی جنگ میں ایک تحرک پیدا ہو جائے گا۔ جو اس وقت کسی حد تک جمود کا شکار ہوگئی ہے۔ اور یہ جنگ کی حالت کو ہی بدل دیں گے۔ ایف 16 طیارؤں کے ملنے کے بعد وہ روسی طیاروں کو پیچھے دھکیل سکیں گے اور یوکرین کے دفاع میں اہم کردار ادا کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں