فلسطینیوں پر تشدد کرنیوالے اسرائیلی آباد کاروں پر سخت اقدامات نافذ کرنا چاہتے: فرانس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

فرانسیسی وزارت خارجہ کی خاتون ترجمان این کلیئر لوگاندے نے انکشاف کیا کہ ان کا ملک مغربی کنارے میں فلسطینی شہریوں کے خلاف تشدد کی کارروائیاں کرنے والے اسرائیلی آباد کاروں کے خلاف سخت اقدامات مسلط کرنا چاہتا ہے۔ ان اقدامات میں انہیں فرانس کا سفر کرنے سے روکنا اور ان کے مالیاتی اثاثے منجمد کرنا شامل ہیں۔

’’العربیہ‘‘ کو دیے گئے بیانات میں لوگاندے نے کہا کہ فرانس مغربی کنارے میں فلسطینیوں کے خلاف آباد کاروں کے گروپوں کی طرف سے تشدد کی کارروائیوں کی مکمل مذمت کا اعادہ کرتا ہے۔ ہم نے اسرائیل سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی ذمہ داریاں سنبھالے اور تشدد کی ان کارروائیوں کو روکنے اور ان کے مرتکب افراد کے خلاف مقدمہ چلانے کے لیے کام کرے

انہوں نے مزید کہا کہ ہم اپنی ذمہ داریاں اٹھائیں گے۔ فرانس قومی سطح پر ایسے اقدامات کرنے کا ارادہ رکھتا ہے جس میں ان لوگوں کو فرانس کا سفر کرنے سے روکنا اور ان کے مالی اثاثوں کو منجمد کرنا شامل ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم یورپی سطح پر بھی اسی طرح کے اقدامات کو اپنانے پر زور دینے کے لیے کام کریں گے۔ یہ وہ موضوع ہوگا جس پر وزیر خارجہ کیتھرین کولونا یورپی یونین کے ممالک کے وزرائے خارجہ کی کونسل کے اجلاس کے دوران خطاب کریں گی۔

یاد رہے جرمنی نے پہلے ہی یورپی یونین سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ ایسی پابندیاں عائد کرنے پر غور کرے۔ امریکہ نے منگل کو اعلان کیا کہ وہ مغربی کنارے میں فلسطینیوں کے خلاف تشدد کی لہر میں ملوث اسرائیلی آباد کاروں کو ویزا نہیں دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں