بیلجیئم کا انتہا پسند اسرائیلی آباد کاروں کے داخلے پر پابندی لگانے کا فیصلہ

حقائق تصدیق ٹرینڈنگ
پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

بیلجیئم کے وزیر اعظم الیگزینڈر ڈی کرو نے اعلان کیا کہ ان کے ملک نے انتہا پسند اسرائیلی آباد کاروں کے داخلے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ العربیہ کو دیے گئے بیانات میں انھوں نے اس امید کا اظہار بھی کیا کہ دیگر یورپی ممالک ان کے ملک کی مثال پر عمل کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ میں جانتا ہوں کہ متعدد یورپی قومیتیں مقبوضہ مغربی کنارے کی بستیوں میں مقیم ہیں۔ بیلجیئم کا موقف اس حوالے سے واضح ہے کیونکہ وہ مغربی کنارے میں جو کچھ ہو رہا ہے اس کی مذمت کرتا ہے۔ ہم انتہا پسند آباد کاروں کو بیلجیئم کی سرزمین پر داخلے سے روکنا چاہتے ہیں۔ ہمیں امید ہے کہ دوسرے ممالک ہماری مثال پر عمل کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا موقف امریکہ کے موقف سے یکساں ہے۔ ہم نے غزہ میں قتل عام بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ہم تمام فریقوں سے بین الاقوامی انسانی قانون کے اصولوں کا احترام کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ ہمیں امید ہے کہ کہ ہماری اپیلوں کو سنا جائے گا۔

قابل ذکر ہے کہ جمعرات کو فرانسیسی وزارت خارجہ کی ترجمان این کلیئر لوگاندرے نے العربیہ کو کہا تھا کہ ان کا ملک مغربی کنارے میں فلسطینی شہریوں کے خلاف تشدد کی کارروائیوں کے مرتکب اسرائیلی آباد کاروں پر سخت اقدامات نافذ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں