یورپ میں حماس ممبران کی گرفتاریاں شروع، جرمنی اور نیدر لینڈ سے چار زیر حراست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

جرمنی اور نیدر لینڈ سے حماس کے چار ممبروں کو اس شبے میں گرفتار کر لیا گیا ہے کہ وہ یورپ میں یہودی اداروں پر حملے کرنا چاہتے تھے۔ ان گرفتاریوں کا جرمن پراسیکیوٹر نے جمعرات کے روز باضاپطہ بیان جاری کیا ہے۔

پراسیکیوٹر کے جاری کردہ بیان کے مطابق ان زیر حراست کئے گئے تین حماس ممبران جن کو برلن سے حراست میں کیا گیا جبکہ چوتھے کو نیدر لینڈ سے گرفتار کیا گیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ان میں سے ایک ڈچ شہریت کا حامل ہے اور اسے روٹرڈیم شہر سے پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ جبکہ لبنان میں پیدا ہوئے دوسرے حماس ممبر عبدالحمید الاحد اور ابراہیم کے علاوہ مصری شہری محمد کو جرمن دارآلحکومت برلن سے گرفتار کیا گیا ہے۔

پراسیکیوٹر کے بیان میں کہا گیا ہے چاروں کا حماس کے ساتھ دیرینہ تعلق ہے۔ ان سب کا حماس کی عسکری قیادت کے ساتھ بھی قریبی رابطہ ہے۔

پراسکیوٹر کے بیان میں کہا گیا ہے کہ عبدالحمید الاحد کو لبنان میں موجود رہنما کے ذریعے اسلحہ کے حصول کا ٹاسک سونپا گیا تھا۔ بعد ازاں یہ اسلحہ برلن میں رکھنا تھا اور امکانی طور پر یہودی اداروں کے خلاف دہشت گردانہ کارروائیوں کے لیے استعمال کیا جانا تھا۔

ادھر یورپی حکام نے خبر دار کیا ہے حماس اسرائیل جنگ کی وجہ سے انتہا پسندوں کے حملوں کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں