شام اور عراق میں امریکیوں پر حملے، حزب اللہ کی اسرائیل پرگولہ باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ پر اسرائیلی جنگ میں شدت آنے کے ساتھ ہی لبنان کی سرحد بھی گرم ہو رہی ہے۔ شام اور عراق میں امریکی افواج پر مسلح دھڑوں کی طرف سے دوبارہ حملے ہوئے ہیں۔

تفصیل کے ساتھ حزب اللہ نے جمعرات کی صبح ایک نئے بیان میں اعلان کیا کہ اس نے ایک اسرائیلی سائٹ پر میزائلوں سے بمباری کی ہے۔ حزب اللہ نے کہا کہ اس نے لبنان کی سرحد پر واقع بارانیت کے جنگلات پر آگ لگانے والے گولے فائر کیے۔ حزب اللہ کا کہنا ہے کہ وہ لبنانی دیہاتوں کو نشانہ بنانے کے اسرائیلی حملوں پرخاموش نہیں رہے گی اور دشمن کو جواب دیا جائے گا۔

اسرائیلی فوج نے بدھ کی شام جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نے شام کی طرف سے مقبوضہ گولان کی پہاڑیوں پر 4 میزائل داغے جانے کی نشاندہی کی تھی اور اس کا جواب دیتے ہوئے لانچنگ سائٹ پر حملے کی شکل میں دیا تھا۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے بدھ کو اطلاع دی تھی کہ اسرائیل نے ملک کے جنوب مغرب میں قنیطرہ کے دیہی علاقوں میں عرنا اور حضر کے دیہات کے ارد گرد شامی فوج کے ٹھکانوں پر دھماکہ خیز میزائلوں سے بمباری کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ کارروائی شام کی طرف سے مقبوضہ گولان کی طرف 4 میزائل داغے جانے کے جواب میں کی گئی ہے۔

شام اور غزہ کی جنگ سے متعلق ایک پیشرفت میں، سیریئن آبزرویٹری نے بدھ کے روز اطلاع دی ہے کہ دو میزائل کونیکو گیس فیلڈ میں امریکی اڈے کے آس پاس میں گرے ہیں۔

آبزرویٹری کا کہنا ہے کہ دو میزائل گرنے کے نتیجے میں دیر الزور دیہی علاقوں میں کونیکو فیلڈ میں امریکی اڈے کے علاقے میں دو پرتشدد دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ تاہم کسی انسانی جانی نقصان کے بارے میں کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔

آبزرویٹری نے بتایا کہ غزہ جنگ میں اسرائیل کی امریکی حمایت کے نتیجے میں شامی علاقے میں امریکی اڈوں پر مسلح دھڑوں نے 19 اکتوبر سے 60 حملے کیے ہیں۔

اسی طرح کے ایک حملے میں، امریکی سینٹرل کمانڈ نے جمعرات کو اعلان کیا کہ بدھ کو عراق میں الاسد ایئر بیس پر ایک میزائل داغا گیا، جہاں امریکی افواج تعینات ہیں تاہم اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں