مصر کی سب سے بڑی فضائی کمپنی ناقص خدمات کی وجہ سے100 عالمی کمپنیوں سے باہر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اپنی تاریخ میں پہلی بار 100 عالمی کمپنیوں کی فہرست سے مصری ایئرکے اخراج نے اراکین پارلیمنٹ میں ایک نئی بحث چھیڑ دی۔ جس کے بعد مصری پارلیمنٹ میں شہری ہوا بازی کے وزیر اور شہری دفاع اور سیاحت کے وزیر کو اس معاملے کی وضاحت کرنا پڑی۔

ناقص خدمات کی فراہمی

رکن پارلیمنٹ کریم طلعت السادات نے کہا کہ EgyptAir کا عالمی درجہ بندی سے اخراج کمپنی کی جانب سے فراہم کردہ ناقص خدمات اور معیار میں گراوٹ کا نتیجہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کمپنی کے پاس انتہائی تجربہ کار کیڈرز اور پائلٹس ہیں۔

انہوں نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں وضاحت کی کہ کمپنی کو گذشتہ برسوں میں نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کمپنی میں ملازمین کی تقرریاں بھی زیادہ ہوتی ہیں۔

انہوں نے اس درجہ بندی کو ایک انتباہی گھنٹی قرار دیتے کمپنی کے معیار اور اس کی طرف سے فراہم کردہ خدمات کو بہتر بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔

کمپنی کے حصص کی فروخت

تاہم سادات نے کمپنی کے حصص بیچنے کی رائے کی مخالفت کی۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک بڑی قومی کمپنی ہے جو غیر ملکی کرنسی میں ریاست کو زر مبادلہ فراہم کرتی ہے۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ کمپنی کے حکام کی عدم دلچسپی اس کی خدمات میں کمی اور معیار کی گراوٹ کی بنیادی وجہ ہے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ سیاحت اور کمپنی کے لیے ریاست کے مضبوط کردار اور حمایت کے باوجود مسئلہ کمپنی کی بدانتظامی میں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں