یرغمال امریکی شہری کی موت'، جو بائیڈن 'دل شکستہ'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی صدر جو بائیڈن نے جمعہ کے روز کہا کہ وہ اس خبر سے "دل شکستہ" ہیں کہ گاڈی ہاگئی نامی ایک امریکی شہری کے بارے میں خیال ہے کہ وہ 7 اکتوبر کو فلسطینی گروپ حماس کے ہاتھوں مارے گئے جب اسرائیل پر حملہ ہوا۔

ایک 73 سالہ اسرائیلی نژاد امریکی شخص گاڈی ہاگئی کے بارے میں پہلے خیال تھا کہ وہ اہلیہ سمیت 7 اکتوبر کے حملے میں یرغمال بنا لیے گئے تھے۔ یرغمالیوں کے اہلِ خانہ کی نمائندگی کرنے والے ایک گروپ نے جمعے کے اوائل میں کہا تھا کہ ہاگئی کی اسیری میں موت واقع ہو گئی تھی۔

صدر نے وائٹ ہاؤس سے جاری ایک بیان میں کہا، "جِل (بائیڈن) اور میں اس خبر سے دل شکستہ ہیں کہ امریکی گاڈی ہاگئی کے بارے میں اب یقین ہو گیا ہے کہ 7 اکتوبر کو وہ حماس کے ہاتھوں مارے گئے۔ ہم ان کی اہلیہ جوڈی کی خیریت اور باحفاطت واپسی کے لیے مسلسل دعاگو ہیں۔"

اسرائیلی میڈیا آؤٹ لیٹ ہاریٹز کے مطابق ہاگئی کی اہلیہ جوڈتھ وائنسٹائن غزہ میں بدستور یرغمال ہیں۔

بائیڈن کے بیان میں اس کے بارے میں مزید تفصیلات نہیں بتائی گئیں کہ ہاگئی کے ساتھ کیا ہوا۔

حماس نے 7 اکتوبر کو اسرائیل میں کبوتزم، سرحدی شہروں اور ایک میوزک فیسٹیول پر حملہ کیا جس میں 1,200 لوگ ہلاک ہو گئے اور وہ 240 لوگوں کو یرغمال بنا کر غزہ لے گئے۔ حماس کے زیرِانتظام وزارتِ صحت کے مطابق غزہ پر اسرائیل کے جوابی حملے میں 20,000 سے زائد افراد جاں بحق ہو چکے ہیں اور کئی افراد کی گمشدگی اور ملبے تلے دبے ہونے کا خدشہ ہے۔

مختلف معلوماتی ذرائع کے حوالے سے اسرائیلی حکومت کی مقرر کردہ کمیٹی کچھ یرغمالیوں کو غیر حاضری میں مردہ قرار دے رہی ہے۔ حماس نے عموماً ان خبروں کی تصدیق نہیں کی لیکن خبردار کیا ہے کہ یرغمالیوں کے لیے "وقت ختم ہو رہا ہے" کیونکہ اسرائیل کے ساتھ فلسطینی مزاحمت کاروں کی جنگ اپنے 12ویں ہفتے کے قریب ہے۔

ہاریٹز نے ان کے خاندان کے حوالے سے ایک بیان میں کہا، "ہاگئی کو "ایک ہونہار آدمی کے طور پر یاد رکھا جائے گا جو اعلیٰ دانش ور اور ہوا سے بجنے والے آلاتِ موسیقی سے محبت رکھتے تھے۔ وہ ایک باصلاحیت باورچی تھے اور اپنی اہلیہ جوڈی کے ہمراہ انہوں نے ایک صحت مند، فعال طریقے سے زندگی بسر کی۔"

خاندانی بیان میں مزید کہا گیا، "ہم اپنے والد اور دادا کی وفات پر غمزدہ ہیں اور ہم امید اور دعا کرتے ہیں کہ ان کی لاش ہمیں واپس مل جائے اور یہ کہ جوڈی ابھی زندہ ہیں اور ہم جلد دوبارہ مل جائیں گے۔"

اسرائیل کے ایک سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 129 افراد غزہ میں قید ہیں جب کہ باقی نومبر کی جنگ بندی کے بعد واپس بھیجے گئے یا فوجی کارروائی کے دوران بازیاب ہوئے۔ اسرائیلی حکومت کا کہنا ہے کہ غزہ میں بدستور موجود افراد میں سے 22 ہلاک ہو چکے ہیں۔

یرغمالیوں اور لاپتہ خاندانوں کے فورم نے کہا کہ پانچ سے 10 کے درمیان یرغمالیوں کے پاس امریکی شہریت ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں