"اپنے آپ کو فلسطینیوں کی جگہ پر رکھ کر دیکھو" اوباما کے ویڈیو بیان پر ہنگامہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوشل میڈیا صارفین نے سابق امریکی صدر براک اوباما کی فلسطینیوں کے حالات کے بارے میں بات کرتے ہوئے ایک ویڈیو کلپ کو بڑے پیمانے پر شیئر کیا۔ صارفین کا دعویٰ ہے کہ یہ غزہ کے موجودہ واقعات کے پس منظر میں ایک حالیہ بیان ہے۔

خبر رساں ادارے ’اے ایف پی‘ کے مطابق تاہم یہ دعویٰ گمراہ کن ہے اور یہ ویڈیو دس سال قبل اس وقت بنائی گئی تھی جب وہ یروشلم میں تقریر کر رہے تھے۔

"حق خود ارادیت"

ویڈیو میں اوباما کو سامعین سے تقریر کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ وہ کہہ رہے ہیں کہ فلسطینی عوام کے حق خود ارادیت اور انصاف کے حق کو تسلیم کیا جانا چاہیے۔ اپنے آپ کو ان کی جگہ پر رکھو۔ دنیا کو ان کی آنکھوں سے دیکھو۔ وہ اپنی زندگی ایک غیر ملکی فوج کے ساتھ گذارتے ہیں جو ان کی نقل و حرکت کو کنٹرول کرتی ہے۔

صارفین کا کہنا ہے کہ "آج اوباما نے پوری بے تکلفی اور ایمانداری کے ساتھ اسرائیلیوں کو مخاطب کیا اور کہا کہ 'اپنے آپ کو فلسطینیوں کی جگہ رکھو"۔

10 سال پرانی کی تقریر

"Obama's Speech to the Palestinians" جیسے کی ورڈز کےاستعمال کرتے ہوئے ویڈیو کو تلاش کرنے سے ایک پرانی ویڈیو سامنے آتی ہے جو 2013 میں براک اوباما کے چینل پر نشر کی گئی تھی اور اس وقت وہ امریکا کے صدر تھے۔

اپنی تقریر میں ان کے تین روزہ دورے کی خاص بات سمجھی جاتی تھی۔ اس وقت کے امریکی صدر نے نوجوان اسرائیلیوں پر زور دیا کہ وہ اپنے لیڈروں پر زور دیں کہ وہ فلسطینیوں کے ساتھ امن مذاکرات کی طرف واپس جائیں۔

"فلسطینی آنکھوں سے دیکھو"

اوباما نے اسرائیلیوں سے کہا کہ وہ "دنیا کو (فلسطینی) آنکھوں سے دیکھیں"۔ انہوں نے کہا کہ "جس طرح اسرائیلیوں نے اپنی سرزمین پر ایک ریاست بنائی، اسی طرح فلسطینیوں کو بھی اپنی سرزمین پر آزاد رہنے کا حق حاصل ہے"۔

تازہ ویڈیو دراصل غزہ پر اسرائیلی جنگ کے حوالے سے انٹرنیٹ پر سرچ کیے جانے والے مواد کا نتیجہ ہے۔ اسرائیلی فوج کی غزہ پر وحشیانہ بمباری میں کم از کم آٹھ ہزار بچوں اور 6,200 خواتین سمیت بیس ہزار افراد شہید ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں