18 سال کے وقفے کے بعد ریٹائر ہونے سعودیوں کی ملاقات کا دلچسپ احوال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کی الخرج گورنری سے تعلق رکھنے والےایک سابق ملازم محمد الجعیلی نے ریٹائرمنٹ لی تو ان کے ساتھ ریٹائر ہونے والے دوسرے ملازمین بھی اپنے اپنے گھروں کو رخصت ہوگئے۔ حال ہی میں محمد الجعیلی نے اپنے ریٹائرڈ ساتھیوں سے ملاقات کی۔ اس ملاقات سے قبل وہ شاید اپنے ان سماجی رشتوں سے دور ہو گئے تھے۔ اس عرصے میں ان کی ملاقات یا تو فون پر محدود کال پر ہوتی تھی یا وٹس ایپ "گروپ" پر ہوتی تھی۔

الجعیلی کو اپنے ان ساتھیوں سے ملنے کی امید نہیں تھی جو ان سے پہلے ریٹائر ہو چکے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ انھوں نے انھیں کافی عرصے سے نہیں دیکھا۔ تاہم حال ہی میں الخرج گورنری میں منعقد ہونے والے پہلے ریٹائرڈ فورم نے گورنری کی میونسپلٹی کو بتایا۔

الجعیلی اپنے ساتھیوں کودیکھ کر اپنے جذبات کو بیان کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ میرے لیے "ناقابل بیان خوشی"۔ پھر اس نے جلدی سے کہا کہ "میں اس خیال سے خوش اور پرسکون ہوں جب میں اپنے ساتھیوں سے طویل عرصے کے بعد ملا تو میری پرانی یادیں تازہ ہوگئیں۔

ان کے ساتھی محمد الجبر نے بے حد خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ ریٹائرمنٹ کی وجہ سے عائد علیحدگی کے برسوں بعد اپنے ساتھیوں سے ملے۔ ان دونوں نے اپنی ذمہ داریوں سے فارغ ہونے کے بعد سوچا بھی نہیں تھا کہ وہ ادارے میں اپنے ان ساتھیوں سے ملیں گے جو ریٹائر ہو چکے ہیں یا یہاں تک کہ وہ لوگ جو اب بھی کام کر رہے ہیں۔ تاہم یہ کامیابی اس فورم کی ہے جس میں ریٹائرڈ افراد کو شامل کیا گیا ہے۔

الخرج میونسپلٹی کے میئر انجینیر خالد الزید نے وضاحت کی کہ پہلے ریٹائرڈ فورم کا انعقاد ان کے عملی سفر کے لیے خراج تحسین ہے جس میں خلوص اور لگن سے کام کیا گیا۔انہو نے کہا کہ یہ فورم ہر سال منعقد کیا جائے گا تاکہ یہ ریٹائرڈ میونسپل ملازمین کے درمیان رابطے کی کڑی مل جائے۔

انجینئر الزید نے کا کہ یہ ریٹائر ہونے والوں کے دلوں میں خوبصورت یادیں بساتے ہیں۔ ان کے اور ان کے ساتھیوں کے درمیان ملاقات کی تجدید کرتے ہیں۔ اس طرح پرانے دوستوں کے ساتھ مل کر پرانی یادیں تازہ کرنے کا موقع ملتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں