انڈونیشیا کی ایک فیکٹری میں دھماکہ ، 12 ہلاک 39 زخمی ہو گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

انڈونشیا کے ایک جزیرے میں قائم صنعتی زون میں اتوار کے روز فیکٹری میں کیمیکلز کی وجہ سے دھماکہ ہو گیا۔ چینی فنڈنگ سے قائم کی گئی اس فیکٹری میں 'نکل' تیار کی جاتی ہے۔ یہ 'نکل پلانٹ' انڈونیشیا کے مشرقی صوبے میں لگایا گیا ہے۔

فیکٹری میں دھماکہ صبح سویرے ساڑھے پانچ بجے ہوا ، جب صوبہ سولاویسی کے مورو والی انڈسٹریل پارک میں اچانک کیمیکلز کی وجہ سے آگ بھڑکی اور قریب ہی موجود ایک بڑے آکسیجن ٹینک بھی دھماکے سے پھٹ گیا۔

بتایا گیا ہے کہ کیمیکل سے شعلہ لپکنے کا واقعہ ایک مرمتی کام کے دوران پیش آیا ، پھر اس شعلے سے گیس ٹینک پھٹ گیا اور ابتدائی اطلاعات کے مطابق 12 افراد ہلاک جبکہ 39 زخمی ہو گئے۔

تاہم ترجمان ڈیڈی کرانیوان نے بتایا گیا ہے کہ 39 زخمیوں میں معمولی اور زیادہ زخمی دونوں شامل ہیں۔ زخمیوں کو فوری علاج معالجہ شروع کر دیا گیا ہے۔

ترجمان کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں سات انڈونیشیائی اور پانچ غیر ملکی شامل ہیں۔ ابتدائی تحقیقات کے مطابق دھماکہ کیمیکل کی وجہ سے اس وقت ہوا جب مرمت کام کام جاری تھا۔

یاد رہے ماہ جنوری کے دوران بھی نکل پگھلانے کے ایک پلانٹ میں حادثے کے نتیجے میں ایک چینی کارکن اور ایک مقامی کارکن بھی ہلاک ہوئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں