مصر "کوئز صنعتی زون" معاہدے میں اسرائیلی اجزاء کا تناسب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

باوثوق ذرائع نے العربیہ بزنس کو بتایا ہے کہ امریکا، مصر اور اسرائیل جو کہ QIZ کے نام سے معروف صنعتی زون کے معاہدے کے فریق ہیں نے امریکا کو مصری ملبوسات کی برآمدات میں اسرائیلی اجزاء کی شمولیت کو 10.5 سے کم کر کے 8.5 فی صد کرنے کے مذاکرات مکمل کر لیے ہیں۔ تینوں ممالک اس تبدیلی پر متفق ہیں۔

ذرائع نے واضح کیا کہ اس کیس میں تینوں فریقین کے درمیان بات چیت کافی عرصہ قبل شروع ہوئی تھی تاہم اجزاء کے فیصد تناسب کو کم کرنے کا حتمی معاہدہ گذشتہ 7 اکتوبر کے واقعات سے قبل طے پا گیا تھا۔

"کوئز" ایک تجارتی معاہدہ ہے جس میں مصر، اسرائیل اور امریکا شامل ہیں۔ مصری مصنوعات کو کسٹم کے بغیر امریکا میں اس شرط پر داخل ہونے کی اجازت دیتا ہے کہ ان مصنوعات میں ایک مخصوص مقدار اسرائیلی مواد کی اس میں داخل ہو۔ اس کا اعلان 2004ء کے آخر میں کیا گیا تھا فروری 2005ء میں یہ معاہدہ نافذ العمل ہوا۔ اسرائیلی جزو کے فیصد شروع میں 11.7 فیصد تھی اور یہ دو سال بعد کم ہو کر 10.5 فیصد رہ گئی۔

یہ معاہدہ 1996ء میں امریکی کانگریس کی طرف سے منظور شدہ اعلان نمبر 6955 کے تحت سامنے آیا، جو صنعتی زون کے اندر پیدا ہونے والی اشیا کے لیے کسٹم سے استثنیٰ دینے کی اجازت دیتا ہے۔

ذرائع نے مزید کہا کہ "غزہ میں جنگ ایک اہم وجہ ہے جس کے نتیجے میں سرکاری معاہدے پر دستخط میں تاخیر ہوئی، لیکن توقع ہے کہ یہ جلد از جلد ہو جائے گا۔

مصری وزارت صنعت و تجارت نے العربیہ بزنس کی جانب سے تبصرہ کرنے کی درخواست کا جواب نہیں دیا۔

معاہدے کے دائرہ کار میں کام کرنے والی بڑی ٹیکسٹائل کمپنیوں میں سے ایک کے سربراہ نے کہا کہ اسرائیلی اجزاء کو کم کرنے سے مصر میں کپڑے کی صنعت کو فائدہ پہنچے گا۔ ’کوئز‘ معاہدے کے اندر اسرائیل کے پاس مصری ملبوسات اور دیگر مصنوعات کافی پیداواری صلاحیت نہیں ہے۔

انہوں نے توقع کی کہ اگر مقامی کارخانوں میں پیداوار عام طور پر بڑھ جائے اور نئی غیر ملکی اور مقامی سرمایہ کاری کے دروازے کھل جائیں تو’کوئز‘ معاہدے کے ذریعے مصر کے کپڑوں کی برآمدات میں نئے اجزاء کے تناسب کے نافذ ہونے کے بعد تقریباً 50 فیصد اضافہ ہو جائے گا۔

"کوئز" سے واقف ایک اور ذریعہ نے العربیہ بزنس کو بتایا کہ مصر ہر سال اوسطاً 150 ملین ڈالر مالیت کا سامان امریکا کو برآمد کی جانے والی مصنوعات میں شامل اسرائیلی مصنوعات کے ذریعے درآمد کرتا ہے۔

ذریعے نے وضاحت کی کہ "اسرائیلی اجزاء کے فیصد میں کمی کے ساتھ برآمدات کو متاثر کیے بغیر اسرائیل سے ان پٹ کی ضرورت کم ہو جائے گی، جو اپنے عروج پر پہنچ چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں