اسرائیل ، یمن ،عراق اور ایران میں جوابی کارروائیاں کر چکا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر دفاع یووگیلنٹ نے منگل کے روز اس بارے میں اشارہ کیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے کئی ملکوں میں جوابی کارروائیاں کی ہیں۔ وزیر دفاع کے مطابق ان ملکوں میں عراق ، ایران اور یمن شامل ہیں۔ انہوں نے کہا یہ جوابی کارروائیاں حماس کے سات اکتوبر والے حملے کے بعد کیے گئے ہیں۔ کیونکہ حماس اور اس کے حامی جنگ کو پھیلانا چاہتے ہیں۔

اسرائیلی وزیر نے کہا ' ہم کئی محازوں پر لڑ رہے ہیں۔ ان میں غزہ، لبنان، شام، یمن ، ایران ،عراق اور مغربی کنارہ شامل ہیں۔ ہم ان تمام محاذوں پر لڑ رہے ہیں۔

وہ پارلیمنٹ کے ارکان سے بات کر رہے تھے۔ اس سے پہلے پارلیمنٹ کے ارکان کے ساتھ خزانہ سے متعلق حکام کی بھی ملاقاتیں ہو چکی ہیں۔پارلیمنٹ کے ارکان کو معیشت پر بوجھ بننے والی جنگ کے بارے میں سوالوں کا جواب چاہیے۔

وزیر دفاع نے کہا جب سات اکتوبر کو حماس نے اسرائیل پر حملہ کیا تھا تب سے لبنانی حزب اللہ شام کے جنگجووں کی طرف سے بھی اسرائیل پر حملوں کی کوشش کی گئی ہے۔ اسی طرح مغربی کنارے کے رہنے والے فلسطینیوں نے بھی کارروائیاں کی ہیں۔

ان کے مطابق یہ میڈیا میں اس طرح چیزیں شائع نہیں ہوئی ہیں ۔ جہاں سے ایرانی حمایت یافتہ حوثی لانگ رینج میزائلوں سے حملے کر رہے ہیں۔ وہ اسرائیل کو بھی نشانہ بنا رہے اور بحیرہ احمر سے گذرنے والے تجارتی جہازوں کو بھی۔

اسی بحیرہ احمر سے ایرانی حمایت ہافتہ جنگجووں نے اسرائیل کے ساحلی شہر ایلات پر بھی میزائل داغے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں