مصر کو غزہ میں جنگ بندی کے لیے اپنے تجویز کردہ فریم ورک پر جواب کا انتظار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر نے اس امر کی تصدیق کی ہے کہ اس کی طرف سے پیش کردہ تجاویز کے لیے متعلقہ فریقوں کے رد عمل کے حوالے سے ابھی انتظار ہے۔

مصری حکام نے جمعرات کے روز اس امر کی تصدیق کی ہے ان کی طرف سے غزہ میں جنگ بندی کے لیے ایک فریم ورک تجویز کیا گیا ہے۔

حکام کے مطابق اس فریم ورک کے تین مراحل ہیں۔ ان ذرائع کے مطابق یہ فریم ورک حماس و دیگر فریقین کے سامنے رکھ دیا گیا ہے، تاہم ابھی اس بارے میں کوئی جواب موصول نہیں ہوا ہے۔

سٹیٹ انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ مصر کے سربراہ دیا راشون نے کہا مصر اس وقت تک اس تجویز کردہ فریم ورک کے نکات اور تفصیلات کو پبلک نہیں کرنا چاہتا جب تک ان کے بارے میں کوئی رد عمل اور پیش رفت سامنے نہیں آجاتی۔

دیا راشون کے مطابق مصر کی طرف سے پیش کردہ یہ تجاویز بنیادی طور پرغزہ میں خونریزی رکوانے، جارحیت کی روک تھام، اور خطے میں امن و استحکام کے مقاصد کے لیے ہے۔ اس کے لیے تمام متعلقین کے نقطہ نظر کو سمجھا اور سنا جائے گا۔ تاکہ ایک دوسرے کے قریب آسکیں۔

مصر کے سیکیورٹی سے متعلق ذرائع کا کہنا ہے اس پیش کردہ فریم ورک میں اسرائیل اور فلسطینیوں کے اسیران کی رہائی کے علاوہ کثیرجہتی جنگ بندی کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ نیز غزہ جنگ کے بعد کی غزہ میں انتظامیہ کے حوالے سے بھی نکتہ شامل ہے۔ لیکن ابھی تمام فریق اپنے ہاں غور کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں