پدرانہ شفقت، والد نے بدسلوکی کرنے والی بد بخت بیٹی کو معاف کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر میں ایک بد بخت لڑکی کی جانب سے اپنے والد کو جوتا مارنے اور اس پر تشدد کرنے کے واقعے میں عدالت کی طرف سے سزا سنائے جانے کے بعد لڑکی کے والد نے اسے معاف کردیا جس کے بعد لڑکی کو بری کردیا گیا ہے۔

یہ ایک ایسے عجیب کیس ہے جسے سننے والوں کی آنکھوں سےبھی آنسو آگئے۔

یہ واقعہ مصر کی امبابہ گورنری میں پیش آیا۔ اسی گورنری کی مجسٹریٹ عدالت نے والد سے بدسلوکی کرنے والی لڑکی کو چھ ماہ قید کی سزا سنائی تاہم والد نے پدرانہ شفقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے بیٹی کو یہ کہہ کر معاف کردیا کہ سزا کی وجہ سے بیٹی کا مستقبل خراب ہوگا۔ والد نے فاضل جج سے درخواست کی کہ اس کی بیٹی کی سزا معاف کردی جائے۔

امبابہ گورنری کی پولیس کا کہنا ہے کہ انہیں سزا پانی والی لڑکی کی چھوٹی بہن نے شکایت کی اس کی بڑی ہمشیرہ نے والد پر تشدد کیا اور اسے جوتے سے مارا پیٹا اور بد بانی کی۔ اس پر پولیس نے لڑکی کو گرفتار کیا اور اس کے خلاف مجسٹریٹ عدالت میں کیس دائر کیا گیا۔

عدالت کے سامنے بیان دیتے ہوئے لڑکی نے کہا کہ اس کے ایک پڑوسی نے والد کے خلاف شکایت کی تھی کہ انہوں اسے برا بھلا کہا اور مارا پیٹا۔ اس پر اس نے اپنے والد کو سمجھانے کے لیے ایسا کیا۔

تاہم اس کی چھوٹی ہمشیرہ نے بتایا کہ بڑی بہن نے والد کو بار بار تشدد کا نشانہ بنایا اور اس کے ساتھ بدسلوکی کی۔پڑوسیوں نے بھی والد پر جوتا پھینکنے والی لڑکی کے خلاف گواہی دی جس کے بعد اسے عدالت کی طرف سے چھ ماہ قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں