بھارتی حکومت نے تحریک حریت جموں و کشمیر غیر قانونی قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی حکومت نے مرحوم حریت رہنما سید علی گیلانی کی تحریک حریت جموں و کشمیر پر دہشت گردی اور ریاست مخالف پروپیگنڈے کے الزام کے تحت پابندی لگا کر غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔

خبر رساں ادارے ’’دی ہندو‘‘ کے مطابق بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ نے کہا کہ یہ گروپ بھارت مخالف پروپیگنڈے اور جموں و کشمیر میں دہشت گرد سرگرمیوں میں ملوث ہے۔

انہوں نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ایکس(سابقہ ٹوئٹر) پر اپنے پیغام میں کہا کہ یہ گروپ جموں و کشمیر کو بھارت سے الگ کرنے کی ممنوعہ سرگرمیوں ملوث رہا تاکہ وہ وہاں اسلامی قوانین نافذ کر سکے۔

ان کا کہنا تھا کہ تحریک حریت جموں و کشمیر کو غیر قانونی سرگرمیوں کے ایکٹ یو اے پی اے کے تحت غیر قانونی قرار دے دیا گیا ہے۔

ہندو قوم پرست رہنما امیت شاہ نے مزید کہا کہ وزیر اعظم نریندر کی دہشت گردی کے خلاف عدم برداشت کی پالیسی کی زیر سرپرستی کوئی بھی شخص یا تنظیم بھارت مخالف سرگرمیوں میں ملوث ہو گی تو اسے فوری طور پر پکڑا جائے گا۔

تحریک حریت جموں و کشمیر کی قیادت مرحوم کشمیری رہنما سید علی گیلانی کرتے تھے اور اس کے بعد اس کی قیادت مسرت عالم بھٹ کے ہاتھوں میں ہے۔

مسرت عالم بھٹ اس وقت جیل میں ہیں اور 27 دسمبر کو مسرت عالم کی جماعت مسلم لیگ آف جموں کشمیر کو بھی کالعدم جماعت قرار دے دیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں