فلسطین اسرائیل تنازع

قبرص سے مصر کے راستے امدادی سامان غزہ پہنچ گیا: برطانیہ اور قبرص کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ اور قبرص نے مصر کے راستے غزہ میں 87 ٹن امدادی سامان بھجوایا ہے۔ یہ بات دونوں ملکوں کی طرف سے منگل کے روز کہی گئی ہے۔ دونوں ملکوں کے حکام کی طرف سے کہا گیا ہے کہ انہوں قبرص سے غزہ کے لیے امدادی سامان بھجوانے کے لیے ایک متبادل سمندری روٹ کی کامیاب آزمائش کرلی ہے۔

اس آزمائش کے نتیجے میں متبادل سمندری روٹ سے یکم جنوری کو کارگو جہاز مصر کی پورٹ سعید کے ذریعے رفح راہداری تک پہنچایا گیا۔

حکام کے مطابق اسرائیل کے زیرہ محاصرہ غزہ میں اس طرح امدادی سامان کی ترسیل کا ایک متبادل راستہ تلاش کرنے کا مقصد پورا ہو ہے۔ کہ کس طرح اسرائیل میں سیکیورٹی چیک ختم کر کے امداد تیز کی جا سکتی ہے۔

قبرص کے صدر نیکوس کرسٹوڈولائیڈز نے اپنے ایک تحریری بیان میں کہا ہے' اب بین الاقوامی برادری کے کے پاس قابل عمل متبادل راستہ آگیا ہے کہ وہ غزہ کی آبادی کو اضافی امداد سامان کی ترسیل ممکن بنا سکے۔'

برطانوی وزیر خارجہ ڈیوڈ کیمرون نے اس موقع پر کہا ہے غزہ میں لوگوں کی مشکلات میں کمی کرنے کے نمایاں طور ہر زیادہ امداد بھیجے جانے کی ضرورت ہے۔' ان کا کہنا تھا برطانیہ غزہ کے عوام کی مدد کے لیے ' کمٹڈ ' ہے۔

واضح رہے تقریباً بارہ ہفتوں سے غزہ کے شہری مسلسل اسرائیل کی جنگی تباہ کاریوں کی زد میں ہیں۔ اب تک 22 ہزار سے زائد فلسطینی ہلاک اور20 لاکھ سے زیادہ بے گھر ہو چکے ہیں۔ پورا غزہ ملبے کے ڈھیر کا منظر پیش کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں