ایران میں دو بد ترین دھماکوں سے ہلاکتوں پر روس، سعودی عرب اور یورپی یونین کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران میں سپاہ پاسداران انقلاب کے مقتول کمانڈر جنرل سلیمانی کی قبر سے متصل ہونے والے دھماکوں کی عالمی برادری کی طرف سے مذمت جاری ہے۔ روسی صدر ولادی میر پیوتن نےاپنے ملک روس کی طرف سے خود اس المناک واقعے کی مذمت کی۔

انہوں نے اس سلسلے میں ایرانی سپریم لیڈر علی خامنہ ای اور ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے نام لکھے گئے خط میں کہا ' ' پرامن شہریوں کو جو ایک قبر پر دعا کرنے کے لیے گئے تھے انہیں ہلاک کرنا اپنے ظلم اور گھٹیا پن کو واضح کرتا ہے۔'

سعودی عرب اور یورپی یونین نے بھی ایران نے دھماکوں سے بڑی تعداد میں ہلاکتوں کی مذمت کی ہے اور ذمہ داروں کو سزا دینے کا مطابہ کرتے ہوئے متاثرین کے ساتھ ہمدردی ظاہر کی ہے۔

بدھ کے روز ایرانی شہر کرمان میں ایران کے مقتول جنرل قاسم سلیمانی کی چوتھی برسی کے سلسلے میں آئے شہریوں کو دو دھماکوں سے نشانہ بنایا گیا، جس سے ایک سو سے زائد ایران ہلاک اور بڑی تعداد میں زخمی ہو گئے۔ دھماکے جنرل قاسم سلیمان کی قبر کے نزدیک کیے گئے۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ' ایکس ' پر اپنے مذمتی بیان میں سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے کہا ' ہم ایران میں پرامن شہریوں پر دہشت گردانہ بم دھماکوں کی مذمت کرتے ہیں۔'

یورپی یونین نے مطالبہ کیا ہے کہ دو دھماکوں کے ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جانا چاہیے۔

یورپی یونین کے خارجہ امور کے ترجمان نے کہا 'کرمان میں آج ہونے والے بم دھماکوں کے بعد ایران کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتی ہے۔ اس دہشت گردی کی کارروائی کے نتیجے میں شہریوں کی حیران کن اور بڑی تعداد میں ہلاکتیں ہوئی ہیں۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں