لال سوٹ میں بیلے ڈانس: رقص کرنے والے یوکرینی صدر ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سوشل میڈیا پر ایک "دلچسپ" ویڈیو کلپ گردش کر رہا ہے، جس میں یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی کو کمال مہارت سے بیلے ڈانس کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

ویڈیو سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر بڑے پیمانے پر وائرل ہوئی ہے جس میں زیلنسکی کو بہت پیشہ ورانہ انداز میں ننگے پاؤں اور سرخ ڈانس سوٹ پہنے محو رقص دکھایا گیا ہے۔

ویڈیو پر صارفین کی طرف سے ملا جلا رد عمل سامنے آیا ہے۔ متعدد صارفین کا دعویٰ ہے کہ یہ خود زیلنسکی ہیں۔ وہ شروع میں ایک اداکار رہے ہیں۔ جب کہ دوسروں نے بیلے رقص میں ان کی مہارت کو سراہا ہے۔

من گھڑت

تاہم یہ ویڈیو، جس کے بارے میں بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ یہ صدر زیلنسکی ہیں ہیں جو ایک سابق اداکار اور اپنے ملک میں ٹی وی شو "ڈانسنگ ود دی اسٹارز" کے فاتح تھے، مصنوعی ذہانت کو بروئے کار لاتے ہوئے ڈیپ فیک ٹکنالوجی کی مدد سے تیار کی گئی ہے، اور یہ جعلی ہے۔

اصل کلپ میں اصلی ڈانسر ظاہر ہوتا ہے، جس کے سر کی جگہ صرف ولادیمیر زیلنسکی کا سر لگا دیا گیا۔

یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ سوشل میڈیا نے زیلنسکی کے بارے میں من گھڑت ویڈیوز نشر کی ہوں۔ ان کی اس طرح کی بہت سی ویڈیوز سوشل میڈیا پر گردش کررہی ہیں اور وہ سب جعلی ہیں۔ انہی میں ایک ایسی ویڈیو بھی ہے جس میں انہیں مزاحیہ فنکارانہ حصہ روسی صدر ولادیمیر پوتین کے سامنے کہتے دیکھا جا سکتا ہے مگر وہ ویڈیو بھی جعلی ہے۔

" فلمی ستاروں کے ساتھ رقص"

قابل ذکر ہے کہ 2019ء میں یوکرین کے صدر منتخب ہونے سے قبل زیلنسکی نے بہ طور کامیڈین کام کیا تھا۔ اس لیے ان کی اسٹیج یا ڈانس کرنے کی کئی پرانی ویڈیوز موجود ہیں۔

زیلنسکی نے 2006ء میں یوکرین میں ٹی وی شو "ڈانسنگ ود دی اسٹارز" بھی جیتا تھا۔

زیلنسکی نے اپنی جوانی میں اپنے فنی کیریئر کا آغاز کیا۔ وہ باقاعدگی سے روسی ٹیلی ویژن پر نشر ہونے والی مزاحیہ سیریز میں حصہ لیتے تھے۔

روسی حکام نے اپنے ملک میں اسے مستقل طور پر دکھانے پر پابندی لگانے سے پہلے اس کے مناظر کو حذف کر دیا۔ یہ سیریز زیلنسکی کا سیاست کی دنیا کا گیٹ وے تھا، کیونکہ اس نے اپنی سیاسی جماعت کی بنیاد رکھی اور اس سیریز کے نام پر ہی جسے انہوں نے ’قوم کا خادم‘ کا نام دیا۔

سابق روس نواز یوکرینی صدر وکٹر یانوکووچ کی معزولی اور روس کی جانب سے 2014 میں جزیرہ نما کریمیا کو اس کی خودمختاری میں شامل کرنے کے بعد زیلنسکی کا سیاسی ستارہ ایک ایسے وقت میں طلوع ہوا جب مشرقی یوکرین میں ماسکو کے حمایت یافتہ علیحدگی پسندوں کے ساتھ جنگ میں اضافہ ہوا اور حکومت پر لوگوں کا اعتماد ختم ہو گیا۔

سیریز "سرونٹ آف دی پیپل" کی پہلی قسط 2015ء میں ریلیز ہوئی تھی، جس میں زیلنسکی نے "واسیلی گولوبوروڈکو" کے کردار میں اداکاری کی تھی، جو ایک تاریخ کے استاد تھے۔اتفاق سے ملک کے صدر بن گئے اور بدعنوانی کے خلاف سخت جنگ لڑی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں