مشہور فرانسیسی اداکار پر ہراسانی کا الزام، میکروں اور ان کی حکومت کا اختلافات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایسا لگتا ہے کہ مشہورفرانسیسی اداکار جیرارڈ ڈیپارڈیو فرانس اوربیرون ملک اپنے اسکینڈل کی وجہ سےایک نیا تنازع کھڑا کرنے کا موجب بنے ہیں۔

تجربہ کار بین الاقوامی اداکار کو ہراسانی کے الزامات کا سامنا کرنے کے بعد صدر عمانویل میکروں اور حکومتی ترجمان کے درمیان اختلاف سامنے آئے ہیں۔ صدر نے ہراسانی کے الزامات کا سامنا کرنے والے ادا کار کی تعریف کی جب کہ حکومت کے ترجمان نے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

ایسا موقف میکروں کے بیانات سے متصادم ہے کیونکہ انہوں نے اس اداکار کی تعریف کی جس پر عصمت دری کے الزامات اور جنسی طور پر ہراساں کرنے کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

فرانسیسی حکومت کے ترجمان نے جمعرات کے روز خواتین کے خلاف جیرارڈ ڈیپارڈیو کے توہین آمیز بیانات پر اپنے "صدمے" کا اظہار کیا۔

سرکاری ترجمان اولیور ویران نے فرانسیسی چینل BFMTV اور RMC ریڈیو کو بتایا کہ "ان تبصروں نے مجھے چونکا دیا۔ میں ان متاثرین کے بارے میں سوچتا ہوں جنہوں نے اپنی توہین محسوس کی"۔

انہوں نے کہا کہ "میں نے جو بیانات دیکھے ان سے میں حیران رہ گیا۔ مجھے بہت برا لگتا ہے، لیکن یہ عدلیہ پر منحصر ہے کہ وہ معاملات کا تعین کرے"۔

وہ فرانسیسی پبلک چینل "فرانس 2" پر پچھلے سال نشر ہونے والے "کمپل مین ڈینکیٹ" پروگرام کی ایک رپورٹ میں اداکار کے بیانات کے حوالے سے بات کررہے تھے۔

موصوف میں فرانس سے باہر اپنے دورے کے دوران متعدد خواتین کو جارحانہ اور توہین آمیز جملے دیتے ہوئے نمودار ہوئے اور یہاں تک کہ اس نے چھوٹی بچی کو بھی جنسی بے راہ روی سے نہیں بچایا ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں