حزب اللہ کے خلاف فوجی کارروائی کے لیے تیار ہیں:اسرائیل کا امریکا کو پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے امریکا کو پیغام پہنچایا ہے کہ وہ لبنانی حزب اللہ کے خلاف فوجی کارروائی کے لیے تیار ہے۔

اسرائیل کی طرف سے یہ پیغام ایک ایسے وقت میں دیا گیا ہے جب لبنان اور اسرائیل کی سرحد پر کشیدگی میں روز افزوں اضافہ ہو رہا ہے۔

اسرائیلی قیادت نے امریکی صدر جو بائیڈن کے ایلچی آموس ہاکسٹین سے کل جمعرات کو تل ابیب میں ملاقات کی۔ یہ ایلچی امریکی انتظامیہ کی طرف سے صورت حال کو پرسکون کرنے کی کوششوں کے سلسلے میں اسرائیل کے دورے پر آئے تھے۔

فوجی کارروائی

انہوں نے واضح کیا کہ وہ سفارتی حل کو ایک موقع دینے کے لیے تیار ہیں ساتھ ہی انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ وقت کم ہے۔

انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ وہ حزب اللہ کو اسرائیلی سرحد سے دور دھکیلنے کے لیے فوجی کارروائی کرنے کے لیے تیار ہیں۔

یہ بیانات ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب علاقائی سطح پر کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے، خاص طور پر گذشتہ منگل کو بیروت کے جنوبی مضافاتی علاقے ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ کے مضبوط گڑھ میں حماس کے رہ نما صالح العاروری کے قتل کے بعد سرحد پر کشیدگی بڑھ گئی ہے۔

دوسری جانب حزب اللہ نےکہا ہے کہ وہ اس قتل کا جواب دے گی۔ اس کے علاوہ ایران کی جانب سے گذشتہ ہفتے شام میں پاسداران انقلاب کے ایک سینیر کمانڈر کی اسرائیلی حملے میں یلاکت کا بدلہ لینے کی دھمکی دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں