برازیل اپنی سرزمین پرحزب اللہ کےگرد گھیرا تنگ کررہا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایسے لگتا ہے کہ برازیل نے ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ کی سرگرمیوں پرگہری نظر رکھی ہوئی ہے۔

حزب اللہ لاطینی امریکا میں برسوں سے موجود ہے اورنیٹ ورکس کے ذریعے لبنان میں خود کومالی اعانت فراہم کرنے کے لیے منشیات کی اسمگلنگ، منی لانڈرنگ اور دیگرغیر قانونی سرگرمیوں کے ذریعے رقم اکھٹی کر کے لاجسٹک سپورٹ اور انفراسٹرکچر فراہم کرنے کی کوشش کرتی ہے۔

فرانسیسی اخبار ’لی فگارو‘ کے مطابق برازیل کی وفاقی پولیس کی ابتدائی معلومات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ حزب اللہ لاطینی امریکا کے سب سے بڑے ملک برازیل کے اندر افراد کو بھرتی کرنے کی کوشش کر رہی ہے، تاکہ خطے میں خاص طور پر ایکواڈور، کولمبیا، بولیویا اور دوسرے ممالک میں اپنا نیٹ ورک پھیلا سکے۔

نیا سلیپرسیل

گذشتہ نومبرمیں برازیل کی پولیس نے اعلان کیا تھا کہ انہوں نے اپنی سرزمین پر حزب اللہ کے ایک ابھرتے ہوئے سیل کو دریافت کیا ہے، جس سے ملک میں ان ملیشیاؤں کی موجودگی کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔

برازیل کی شہریت کے حامل تین افراد سے نومبر میں حزب اللہ کے ایک یا زیادہ عہدیداروں سے ملاقات کے لیے لبنان کے دورے کے بارے میں پوچھ گچھ کی گئی۔ ان میں سے دو کو گرفتار کر لیا گیا جبکہ تیسرے کو رہا کر دیا گیا۔

ایک چوتھا شخص جو کہ پولیس آپریشن کا اصل ہدف تھا اب تک بچ گیا ہے۔

پریشان کن مماثلتیں

’لی فگارو‘ کے ذریعہ حاصل کردہ تین میں سے دو افراد سے پوچھ گچھ کی گئی کی جن سے پریشان کن مماثلتیں ظاہرہوئیں۔

یہ دونوں افراد نے ایک دوسرے کو نہیں جانتے تھے اور نہ ہی پہلے سے کوئی رابطہ کیا تھا۔ان کا کہنا تھا وہ لبنان گئے کہ وہ حزب اللہ کے ارکان سے ملیں گے۔

انھوں نے پولیس کو بتایا کہ انھوں نے پہلی رات ایک خستہ حال ہوٹل میں گذاری۔ انہیں سمندر کے قریب ایک پرتعیش سہولت میں منتقل کیا گیا جس کے تمام اخراجات ادا کیے گئے۔

دونوں سے کہا گیا کہ وہ اپنے فون اور سمارٹ گھڑیاں اپنے ہوٹل کے کمروں میں چھوڑ دیں۔ اس سے پہلے کہ مسلح افراد انہیں "آفیشل" سے ملنے لے جائیں جنہوں نے ان سے "قتل" کرنے کی صلاحیت کے بارے میں پوچھ گچھ کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملاقات کے دوران اسکرین کے پیچھے چھپے ایک مترجم نے ان کی مدد کی۔

برازیلیا میں وفاقی پولیس کے ایک رکن نے اپنی شناخت خفیہ رکھنے کی شرط پر بتایا کہ یہ پرتشدد جرائم اور منشیات کی سمگلنگ کی تاریخ رکھنے والے لوگ ہیں، لیکن ضروری نہیں کہ ان کا نظریاتی تعلق ہو۔

خفیہ نیٹ ورک کو پھیلانا

یہ معلومات اس وقت سامنے آئیں جب حزب اللہ دنیا بھر میں ایک خفیہ نیٹ ورک کو پھیلانے کی کوشش کر رہی ہے، جس میں سلیپر سیل کام کرنے کے لیے تیار ہیں۔ اس آپریشن کی نگرانی اس کے "سیل 910" کے ذریعے کی جاتی ہے، جو اس کے بیرونی فرائض کے لیے ذمہ دار ہے۔

قابل ذکر ہے کہ امریکی اور اسرائیلی انٹیلی جنس سروسز نے 1990ء کی دہائی سے برازیل میں حزب اللہ کی مبینہ کارروائیوں کے بارے میں خبردار کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں