بحیرہ احمر میں بحری جہاز کے قریب حوثی ڈرون مار گرایا: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی سینٹرل کمانڈ نے اعلان کیا کہ اس نے ہفتے کی صبح جنوبی بحیرہ احمر میں تجارتی بحری جہازوں کے قریب یمن میں حوثی باغیوں کے زیر کنٹرول علاقوں سے لانچ کیے گئے ڈرون کو مار گرایا۔

اس نے "ایکس" پلیٹ فارم کےاپنے آفیشل اکاؤنٹ کے ذریعے ایک ٹویٹ میں مزید کہا کہ اس نے صبح تقریباً 9:30 بجے ایک ڈرون کو مار گرایا، جسے یمن میں حوثیوں کے زیر کنٹرول اور ایران کی حمایت یافتہ گروپ کے علاقوں سے لانچ کیا گیا تھا۔

اس واقعے میں کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

قابل ذکر ہے کہ غزہ کی پٹی میں 7 اکتوبر 2023ء کو فلسطینی دھڑوں اور اسرائیل کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد سے حوثیوں نے اعلان کیا تھا کہ اسرائیل کی طرف جانے والے یا اسرائیل سے تعلق رکھنے والے تجارتی جہازوں پر درجنوں حملے کیے گئے ہیں۔

جب کہ 20 میں سے 8 بحری جہاز جن پر گذشتہ 25 دسمبر سے پہلے کے 30 دنوں میں حملہ کیا گیا تھا یا تو وہ برطانیہ میں رجسٹرڈ تھے، یا ان کا عملہ برطانوی شہریوں یا برطانیہ کا سامان لے کر جا رہا تھا۔

امریکا نے 18 دسمبر 2023 کو ایک کثیر القومی بحری فوجی اتحاد کے قیام کا اعلان کیا، جس کا مقصد بحیرہ احمر کے راستے اسرائیل جانے والے تجارتی بحری جہازوں کو نشانہ بنانے والے حوثیوں کے حملوں کا مقابلہ کرنا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں