یمن اور حوثی

اِب کی سینٹرل جیل میں خواتین قیدیوں پر حوثی ملیشیا کا تشدد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مسلح حوثی عناصر اور نام نہاد "زینبیات"ملیشیا کے ایک دستے نے اب گورنری (وسطی یمن) کی مرکزی جیل میں خواتین قیدیوں پر حملہ کیا۔ انہیں تشدد کا نشانہ بنایا۔

اس واقعے کے بعد خواتین قیدیوں نے تشدد کا سلسلہ بند کرنے اور جیل کانہ جات کے نگران رضوان سنان کو عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔

اب کے سینٹرل جیل میں سکیورٹی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ حوثی گروپ کے زیر کنٹرول جیل انتظامیہ کی طرف سے ان کے ساتھ ناروا سلوک کے خلاف خواتین قیدیوں نے احتجاج کیا۔

قیدیوں نے جیل کے ڈائریکٹر رضوان سنان کو برطرف کرنے اور ان کی روزمرہ کی تکالیف اور اصلاحی انتظامیہ کی طرف سے روزانہ کی بنیاد پر کی جانے والی خلاف ورزیوں کے خاتمے کا مطالبہ کیا۔

ذرائع نے نشاندہی کی کہ ایک فورس اور "زینبیات" کے نام سے مشہور گروپ نے خواتین مظاہرین کو دبایا اور ان کے خلاف غیر منصفانہ سلوک کیا۔ ان میں سے بعض کو قید تنہائی میں قید کر دیا گیا، جبکہ ان میں سے بعض کو صنعاء بھیجنے کا فیصلہ کیا۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ جیل کے انتظامی عملے کے اندر جیل کے محافظوں اور دیگر افراد کے طور پر کام کرنے والے حوثی عناصر نے چند روز قبل متعدد خواتین قیدیوں کو مارا پیٹا اور ان پر حملہ کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں