جنگ انسانیت کے خلاف جرم ہے : پوپ فرانسس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مسیحی پوپ فرانسس نے جنگ کو انسانیت کے خلاف جرم قرار دیا ہے۔ وہ اتوار کے روز ایک ایسے موقع پر بات کرے تھے جب غزہ میں اسرائیلی جنگ کو سو دن ہو گئے اور یوکرین میں روس کی جنگ کے دو سال مکمل ہونے جارہے ہیں۔

غزہ میں اسرائیلی جنگ کے خلاف جنوبی افریقہ اسرائیل کے خلاف فلسطینیوں کی نسل کشی کا الزام اور فوری جنگ بندی کا مطالبہ لے کر بین الاقوامی عدالت انصاف میں گیا ہے۔

تاہم امریکہ اور مغربی ممالک کی بڑی تعداد اسرائیل کے خلاف عدالت میں جانے کے جنوبی افریقی اقدام کی حمایت کے لیے تیار ہیں نہ جنگ بندی کا مطالبہ آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔

اس کے باوجود پوپ کا یہ بیان غیر معمولی ہے۔ ان کا کہنا تھا' ہمیں یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ لوگ امن چاہتے ہیں۔ ۔۔ دنیا کو امن کی ضرورت ہے۔ ۔۔ جنگی جبر اور بے رحمیت کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا دنیا کے مختلف حصوں میں جنگ جاری ہے، اس لیے ہمیں یوکرین اور غزہ میں امن کا مطالبہ کرنا چاہیے۔'

پوپ نے جنگ کو انسانیت کے خلاف قرار دینے کے بعد کہا ' ہمیں دعا کرنا چاہیے جو بھی ان جنگوں کے لیے طاقت رکھتے ہیں وہ یہ سمجھ سکیں کہ جنگیں مسائل کا حل نہیں ہیں۔ یہ انسانوں کے لیے موت کا بیج بنتی ہیں ، شہری انفراسٹرکچر کو تباہ کرتی ہیں۔'

واضح رہے غزہ میں اسرائیلی جنگ کے سو دن مکمل ہونے پر فلسطینیوں کی ہلاکتیں 23968 ہو چکی ہیں۔ جبکہ پورا غزہ تباہ کر دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں