فلسطین اسرائیل تنازع

امریکہ کے بحری جنگی جہازکو تباہ کرنے آنے والا حوثی کروز میزائل مار گرایا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی فوج نے اتوار کے روز ایک بیان میں بتایا ہے کہ حوثیوں کے زیر قبضہ علاقے سے داغا گیا کروز میزائل مار گرایا ہے۔ یہ کروز میزائل امریکی جنگی جہاز کو تباہ کرنے کے لیے داغا گیا تھا ۔ لیکن راستے میں ہی گرا دیا گیا۔

حوثیوں کی طرف سے جب سے بحیرہ احمر میں جہازوں پر راکٹ ، ڈرون اور میزائل فائر کرنے کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے کسی امریکی بحری جہاز پر یہ پہلا چلایا گیا کروز میزائل تھا۔

امریکی سینٹ کام کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق یہ واقعہ 14 جنوری 2024 کو اتوار کے روز صنعا کے وقت کے مطابق شام پونے پانچ بجے سامنے آیا ہے۔ حوثی میزائل جہاز شکن کروز تھا۔ یہ یمن میں حوثیوں کے زیر قبضہ علاقے سے داغا گیا تھا اور اس کا رخ لیبون کی طرف تھا ۔ یہ علاقہ بحر احمر کا جنوب کی طرف ہے۔

امریکہ کی طرف سے کارروائی کر کے اسے حدیدہ کے ساحل کے قریب ہی روک کر گرا دیا گیا۔ سینٹ کام کا کہنا ہے کہ حوثی کروز سے کوئی جانی نقصان ہوا نہ کوئی فوجی زخمی ہوا ہے۔

ادھر حوثیوں کا کہنا ہے کہ وہ غزہ میں جاری جنگ کے خلاف رد عمل میں اور فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے بحیرہ احمر اسرائیل اور اس کے حامیوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔
اس سے قبل امریکی فوج نے اس کروز حملے کی تردید کی تھی کہ حوثیوں نے اتوار کے روز کوئی حملہ کیا ہے۔حوثی میڈیا کے مطابق حدیدہ پرامریکی اور برطانوی حملہ بھی کیا گیا تھا۔ لیکن امریکی حکام نے غیر رسمی طور پر بتایا ہے امریکی اتحاد نے آج کوئی حملہ نہیں کیا ہے

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں