پاکستان سے زبردستی واپس اپنے گھروں کو بھیجےگئے افغانوں کےلئے شاہ سلمان ریلیف کی امداد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے بین الاقوامی سطح پر کام کرنے والے امدادی ادارے شاہ سلمان ریلیف کی طرف سے ان ہزاروں افغانوں کو امدادی سامان کی تقسیم جاری یے جنہیں پاکستان نے زبردستی اپنے ملک اور گھروں کو واپس دھکیل دیا ہے۔

پاکستان نے اس سلسلے میں اعلان کر رکھا تھا کہ جن افغانیوں کے پاس کوئی بھی دستاویز نہیں ہے وہ ایک طے شدہ مدت کے اندر واپس افغانستان میں اپنے گھروں کو چلے جائیں ۔ بصورت دیگر انہیں زبردستی واپس دھکیل دیا جائے گا۔

واضح رہے 1979 سے پاکستان میں مسلسل لاکھوں افغان مہاجرین نے پناہ لے رکھی ہے۔ اس دوران بہت ساروں نے کسی نہ کسی طرح پاکستان کی شہریت کا حصول ممکن بنا لیا۔

بہت سوں نے مہاجرین کی مخصوص دستاویزات کی بنیاد پر رہائش رکھے رکھی۔ لیکن ایک قسم ان افغانوں کی بھی رہی جس کے پاس کسی طرح کی بھی کوئی دستآویزات تھیں نہ وہ پاکستان میں کبھی رجسٹرڈ مہاجرین بنے۔ لیکن پچھلے اکتوبر اور نومبر میں انہیں واپس بھیج دیا گیا۔

ان میں سے بہت سے ایسے بھی ہیں جن کے لئے افغان ہونے کے باوجود افغانستان میں رہنے کے لیے گھر نہیں ہے۔ ان کے پاس کوئی روزگار ہے نہ کوئی سرمایہ۔

شاہ سلمان ریلیف نے انہیں افغانستان میں امدادی سامان کی فراہمی شروع کر دی ہے۔ یہ صوبہ قندھار میں سپن بولدک کے راستے بھیجے گئے ہیں۔ شاہ سلمان ریلیف ان کی مدد کے لئے پیش پیش ہے۔

افغان ہلال احمر کے مطابق کےبتوسط سے بھی ان کی امداد کی جارہی ہے۔ افغانستان کی وزارت برائے مہاجرینبکے ترجمان عبدالمطلب حقانی نے اس فراخدلانہ امداد پر سعودی عرب اور شاہ سلمان ریلیف کا شکریہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں