یمن پر امریکی جنگی طیاروں کے پھر حملے، حوثیوں کے جہاز شکن میزائل تباہ: سینٹ کام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی جنگی طیاروں نے منگل کو ایک بار پھر یمن پر حملے کر کے حوثیوں کے مراکز کو نشانہ بنایا ہے۔ ان تازہ امریکی حملوں کی امریکی فوج کی سنٹرل کمانڈ ( سینٹ کام ) نے تصدیق کے لیے ایک بیان بھی جاری کیا ہے۔

منگل کے روز ہونے والے امریکی حملے ایک ہفتے سے بھی کم مدت کے دوران یہ دوسرا موقع ہے کہ خطے میں کشیدگی کم کرنے کی کوشش کرتے کرتے بحیرہ احمر سے جڑے ملک یمن پر امریکہ نے اس طرح کھلے عام چڑھائی کی ہے۔

اس سے پہلے امریکہ کے علاوہ برطانیہ کے جنگی طیاروں نے بھی جمعہ کی رات یمن پر درجنوں حملے کیے تھے۔ جمعہ کے روز کے حملوں کے حوثیوں کی ریڈار سائٹ کا بطور خاص نشانہ لیا گیا تھا۔

تاہم منگل کو سامنے آنے والی امریکی حملوں کی اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ امریکی طیاروں نے حوثیوں کے پاس موجود ان میزائلوں کو بطور خاص نشانہ بنا کر تباہ کیا ہے۔

ایک روز قبل حوثیوں نے پیر کے روز امریکی کنٹینرز کو ہدف بنایا تھا، جس کے اگلے روز ایک امریکی حملے کے نتیجے میں بلیسٹک میزائلوں کو تباہ کیا ہے۔

امریکہ کے دفاعی ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثیوں کے ان میزائلوں کو تجارتی جہازوں پر حملوں کے لیے تیار ی کی پوزیشن میں رکھا گیا تھا۔ لیکن ان کے استعمال سے پہلے ہی انہیں تباہ کر دیا گیا۔

بتایا گا ہے کہ منگل کو دن کے ایک بجکر پنتالیس منٹ پر حوثیوں نے 16 جنوری حوثیوں نے میزائل داغے ۔ حوثیوں کا کہنا ہے کہ ان کے میزائل حملے غزہ میں اسرئیلی جنگ کے خلاف رد عمل کے طور پر داغے گئے تھے۔ وہ اپنی ان کارروائیوں کو مزید جاری رکھنے کا عزم کیے ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں