بحیرہ احمر میں حوثیوں نے امریکی جہاز کو بھی نشانہ بنا ڈالا: سینٹ کام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی حکام نے 'العربیہ' کو بتایا ہے کہ حوثیوں نے بحیرہ احمر میں امریکی جہاز کو نشانہ بنایا ہے۔ امریکی حکام کے مطابق جہاز کو جب نشانہ بنایا گیا تو اس پر امریکی پرچم یا نشان موجود نہیں تھا۔

حکام کے مطابق نشانہ بننے کے بعد بھی امریکی جہاز نے اپنا سفر جاری رکھا۔ دریں اثنا 'یونائیٹڈ کنگڈم میری ٹائم ٹریڈ آپریشنز' (یو کے ایم ٹی او) گروپ نے رپورٹ کیا ہے کہ جب اسے ٹارگٹ کیا گیا تو اسے آگ لگ گئی۔

جہاز کو بغیر عملے کے چلنے والے ایک ایریل سسٹم سے یمن کی بندرگاہ عدن کی طرف سے نشانہ بنایا گیا تھا۔ یہ علاقہ یمن کے جنوب مشرق میں ہے۔

امریکی حکام نے تصدیق کی ہے کہ یہ جہاز امریکہ کی ملکیت تھا۔ تاہم یہ ظاہر نہیں کیا کہ یہ امریکہ کا جنگی بحری جہاز تھا یا تجارتی جہاز تھا۔ دوسری طرف یمن کے حوثیوں نے دعوی کیا ہے کہ انھوں نے جینکو (GENCO) پکارڈی کو خلیج عدن میں کئی میزائلوں سے نشانہ بنایا تھا۔

امریکی سینٹ کام کے حکام نے کہا ہے کہ یو اے ایس نامی جہاز پر حملہ حوثیوں نے اپنے زیر کنٹرول علاقے سے کیا تھا جبکہ ایم / وی جینکو پکارڈی کو حوثیوں نے خلیج عدن میں نشانہ بنایا۔

سینٹ کام حکام کے مطابق جہاز کو کچھ نقصان پہنچا ہے تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ اس لیے ایم / وی جینکو پکارڈی اب بھی سمندر میں موجود رہنے کے لیے ٹھیک ہے۔

واضح رہے بدھ کے روز حوثیوں کی طرف سے کیا گیا یہ حملہ ان کے اس اعلان کا حصہ ہے جس کے تحت وہ غزہ میں اسرائیلی جنگ کے خلاف اپنا عملی ردعمل ظاہر کر رہے ہیں۔

انھوں نے اعلان کر رکھا ہے کہ اسرائیل اور اس کو جانے والے ہر جہاز کے علاوہ اس کو غزہ جنگ میں مدد دینے والے تمام ملکوں اور بحیرہ احمر سے گزرنے والے تجارتی جہازوں کو نشانہ بنائیں گے۔

امریکہ نے بھی بدھ کے روز حوثیوں کو ایک بار پھر اسی فہرست میں شامل کر لیا ہے جس فہرست میں امریکہ کی طرف سے دہشت گرد تنظیموں کو شامل کیا جاتا ہے۔ حوثیوں کو امریکہ نے اس سے پہلے دہشت گرد قرار دے رکھا تھا۔ تاہم یمن میں امن معاہدوں کے بعد اس فہرست سے نکال دیا گیا۔

پچھلے جمعہ کی رات کو امریکہ اور برطانیہ کے جہازوں نے یمن پر حملہ کرتے ہوئے ان علاقوں کو اپنا ہدف بنایا تھا جہاں پر حوثیوں کے مراکز موجود ہیں۔

بعد ازاں بھی امریکہ کی طرف سے حوثیوں پر یمن میں حملے جارے رکھے گئے ہیں۔ تازہ حملے حدیدہ بندرگاہ کے قریب حوثیوں پر کیے گئے ہیں۔ جواباً حوثیوں نے بھی اپنے حملے جاری رکھنے کا کہا ہے۔ خصوصاً اسرائیل اور اس کے اتحادی ملکوں کے جہازوں کو آئندہ بھی نشانہ بناتے رہنے کا اعلان کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں