فلسطین اسرائیل تنازع

برطانوی وزیر خارجہ کا دورہ مشرق وسطیٰ،غزہ میں جنگ بندی اور امداد پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانوی وزیر خارجہ ڈیوڈ کیمرون بدھ کو اسرائیل کا دورہ کریں گے جس کا مقصد فلسطینیوں کی ہلاکتوں کی بڑی تعداد پر تشویش کا اظہار اور غزہ جنگ میں "پائیدار" جنگ بندی کے لیے زور دینا ہے۔

دفتر خارجہ کے بیان کے مطابق کیمرون اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو سے کہیں گے کہ "غزہ میں ریسکیو امداد کے بہاؤ کو تیز کرنے کے لیے جلد اور فوری اقدامات ہونے چاہئیں" اور وہ "شہریوں کی ہلاکتوں کی بڑی تعداد پر تشویش" کا اظہار کریں گے۔

کیمرون نے کہا کہ "کوئی بھی اس تنازعہ کو زیادہ دیر تک نہیں دیکھنا چاہتا ہے۔" "اب امداد حاصل کرنے اور یرغمالیوں کو باہر نکالنے کے لیے فوری وقفہ ضروری ہے۔ صورتحال مایوس کن ہے۔

کیمرون کا دورہ، جس میں مغربی کنارے، قطر اور ترکی کے دورے شامل ہوں گے، صرف دو ماہ کے دوران مشرق وسطیٰ کے لیے ان کا تیسرا دورہ ہے۔

دورے کے مقاصد میں جنگ سے نکلنے کے طریقہ کار، حماس گروپ کے زیر حراست تمام اسرائیلیوں کی رہائی، فلسطینی اتھارٹی کی جانب سے انکلیو کو چلانے اور اسرائیل پر راکٹ حملوں کے خاتمے پر بات چیت بھی شامل ہے۔

خیال رہے کہ اسرائیل نے 7 اکتوبر کو عسکریت پسندوں کے حملے کے بعد غزہ میں حماس کو ختم کرنے کے لیے ہمہ گیر جنگ چھیڑ دی تھی۔ جنوبی اسرائیلی قصبوں اور اڈوں پر اس حملے میں 1,200 افراد ہلاک ہوئے، جن میں زیادہ تر عام شہری تھے۔

غزہ کی وزارت صحت نے منگل کو ایک بیان میں کہا کہ 7 اکتوبر سے اب تک تقریباً 25,490 فلسطینی جن میں سے بہت سے خواتین اور بچے ہیں اس تنازعہ میں مارے جا چکے ہیں، اور 2.3 ملین آبادی میں سے زیادہ تر بے گھر ہیں، جس کی وجہ سے ایک انسانی تباہی آئی ہے۔

کیمرون اسرائیل پر زور دیں گے کہ وہ غزہ تک امداد کی ترسیل کی اجازت دینے کے لیے مزید کراسنگ پوائنٹس کھولے اور یہ کہ فلسطینی علاقوں میں پانی، ایندھن اور بجلی کو بحال کیا جانا چاہیے۔

کیمرون فلسطینی صدر محمود عباس سے بھی ملاقات کریں گے اور اسرائیل کے ساتھ مل کر فلسطینی ریاست کے قیام کے لیے ایک امن معاہدے کے لیے برطانیہ کی طویل مدتی حمایت کو اجاگر کریں گے۔

کیمرون اس کے بعد مزید سفارتی بات چیت کے لیے ہفتے کے آخر میں قطر اور ترکی جائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں