مشرق وسطیٰ

سعودی عرب نے اسرائیلی حق دفاع کا دعوی مسترد کر دیا

اقوام متحدہ کے مباحثے میں مملکت کا الگ فلسطینی ریاست کے قیام کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے نائب وزیر خارجہ انجینیئر ولید الخریجی نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مشرق وسطی کی صورت حال پر کھلے مباحثے میں شرکت کی ہے۔ انہوں نے اجلاس میں وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان کی نیابت کی۔

سرکاری خبر رساں ادارے ’ایس پی اے‘ کے مطابق اجلاس سے خطاب میں انہوں کہا’ اسرائیل کے مسلسل جارحانہ حملوں، وسیع پیمانے پر اندھا دھند بمباری سے غزہ کی صورتحال دھماکہ خیز ہے۔ کشیدگی بڑھتی جا رہی ہے۔ اسرائیلی جارحیت کے باعث متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔‘

انہوں نے سعودی عرب کا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ ’غزہ میں نہتے شہریوں کی ہلاکتیں بند کرانے کے لیے فوری اور ٹھوس اقدامات کرنے اور اس تنازع کے خاتمے کے لیے بین الاقوامی برادری کی مشترکہ ذمہ داری پر زور دیا۔

سعودی عرب کے نائب وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ’ غزہ میں جاری جنگ پوری دنیا کے سامنے ہو رہی ہے۔ اس کے نتائج کے ذمے دار سب ہیں۔‘

انہوں نے کہا کہ’ سعودی عرب غزہ کی جنگ کا دائرہ پھیلے اور علاقائی امن واستحکام پر اس کے اثرات سے خبردار کر چکا ہے۔ ہماری ترجیح انسانی مصائب اور فلسطین میں عسکری اقدامات کا خاتمہ ہے جبکہ بحیرہ احمر اور یمن میں ہونے والے عسکری حملے تشویشناک ہیں۔‘

سعودی نائب وزیر خارجہ نے کہا ’غزہ بحران کے منفی اثرات سے پڑوسی ممالک اور عالمی امن و سلامتی کو درپیش خطرات سے بچانے کے لیے ضروری اقدامات کرنا ہوں گے۔ بحران کا پائیدار اور منصفانہ حل تلاش کرنا ہو گا۔‘

الخریجی کا کہنا تھا ’سعودی عرب خود کے دفاع کے بہانے غزہ کے خلاف عسکری کارروائی کو پوری قوت سے مسترد کرتا ہے۔ غزہ کے باشندوں کی جبری بے دخلی کو بھی مسترد کیا جاتا ہے۔‘

انجینیئر ولید الخریجی نے کہا کہ ’غزہ میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ فلسطینیوں کی زندگی سے کھلواڑ ہے اور یہ ناقابل قبول ہے۔ غزہ میں کارروائی مستقبل قریب میں کسی مثبت اقدام کے بغیر غزہ کو مستقل بنیادوں پر تشدد کا نشانہ بنائے رکھے گی۔ ‘

سعودی عرب کسی بھی فریق کی جانب سے اور کسی بھی بہانے سے بین الاقوامی انساینی قانون کی خلاف ورزیوں کو پوری قوت سے مسترد کرتا ہے۔

انہوں نے سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا ہے کہ عالمی فورم قابض اسرائیلی افواج کو بین الاقوامی قانون کا پابند بنائے۔ غزہ کا المیہ ختم کرائے اور فلسطینی عوام کے حقوق اور وقار کی ضامن خودمختار ریاست قائم کرائے۔

اجلاس میں نیویارک میں اقوام متحدہ کے مستقل نائب مندوب محمد العتیق اور نائب وزیر خارجہ کے دفتر کے ڈائریکٹر جنرل مطشر العنزی بھی موجود تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں