گوگل کی اسرائیلی اے آئی فرموں اور فلسطینی کاروباروں کے لیے 8 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گوگل کی ملکیتی کمپنی الفابیٹ گروپ نے بدھ کو کہا کہ گوگل اسرائیلی ٹیک فرموں اور فلسطینی کاروباروں کی مدد کے لیے 8 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کر رہا ہے۔

بیان میں اسرائیل اور حماس جنگ کے دوران چھوٹی کمپنیوں کی مالی اعانت حاصل کرنے کی ضرورت کا حوالہ دیا گیا۔

گوگل نے کہا کہ اس کا 4 ملین ڈالر کا سپورٹ فنڈ اسرائیل میں اے آئی سٹارٹ اپس کو فراہم کیا جائے گا اور مزید 4 ملین ڈالر ابتدائی مرحلے کے فلسطینی سٹارٹ اپس اور کاروباروں کو کام جاری رکھنے میں مدد کے لیے جائیں گے۔

اسرائیلی سٹارٹ اپس کو دی جانے والی گرانٹ اسرائیل انوویشن اتھارٹی کے ہنگامی فنڈ کے علاوہ ہوگی جو 7 اکتوبر کو جنگ شروع ہونے کے بعد شروع کیا گیا تھا۔

گوگل نے بیان میں کہا کہ"موجودہ صورتحال میں، اسرائیل میں بہت سے اسٹارٹ اپ سرمایہ کاروں سے سرمایہ اکٹھا کرنے کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں اور انہیں کام جاری رکھنے کے لیے فوری طور پر مالیاتی پل کی ضرورت ہے۔"

گوگل نے مصنوعی ذہانت سلوشنز اور سروسز میں تقریباً 20 اسٹارٹ اپس کی مدد کی پیشکش کی ہے۔

اس کے علاوہ، مقامی اور عالمی غیر منافع بخش تنظیموں کے ساتھ شراکت میں، یہ 1,000 فلسطینی چھوٹے کاروباروں کو قرضے اور گرانٹ فراہم کرے گا۔

یہ فلسطینی علاقوں میں 50 ٹیک اسٹارٹ اپس کو بھی گرانٹ فراہم کرے گا۔ مجموعی طور پر اسے 4,500 ملازمتوں کے تحفظ اور فلسطینیوں کے لیے نئی ملازمتیں پیدا کرنے میں مدد کی امید ہے۔

گوگل نے اسرائیل کی ہنگامی کوششوں کے ساتھ ساتھ غزہ میں فراہم کی جانے والی انسانی امداد کے لیے بھی لاکھوں ڈالر عطیہ کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں