لڑائی میں وقفے کے لیے قیدی تبادلہ معاہدہ اہم ہے، امیر قطر اور بائیڈن کا اتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وائٹ ہاؤس کے مطابق امریکی صدر جو بائیڈن نے جمعے کے روز امیر قطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی سے غزہ کے حوالے سے بات کی اور دونوں رہنمائوں نے اتفاق کیا کہ حماس کے ہاتھوں یرغمال بنائے گئے افراد کی رہائی کے لیے کوششیں لڑائی میں طویل وقفے کے لیے کلیدی حیثیت رکھتی ہیں۔

وائٹ ہاؤس نے ایک بیان میں کہا، "دونوں رہنماؤں نے اس بات کی تصدیق کی کہ یرغمالیوں کا معاہدہ لڑائی میں طویل عرصے تک انسانی بنیادوں پر وقفہ قائم کرنے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لیے مرکزی حیثیت رکھتا ہے کہ غزہ میں ضرورت مند شہریوں تک اضافی جان بچانے والی انسانی امداد پہنچے۔"

بائیڈن کے مشرق وسطیٰ کے مشیر بریٹ میک گرک اس ہفتے دوحہ میں تھے جو اسرائیل اور حماس کے درمیان ایک اور یرغمالی معاہدے کے امکان کے بارے میں بات چیت کر رہے تھے۔

وائٹ ہاؤس کے ترجمان جان کربی نے منگل کو کہا کہ امریکہ غزہ میں لڑائی میں طویل انسانی تؤقف کی حمایت کرے گا تاکہ یرغمالیوں کی رہائی اور امداد کی ترسیل یقینی بنائی جا سکے۔

بائیڈن نے جمعہ کو مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی سے بھی بات کی۔

وائٹ ہاؤس نے ایک بیان میں کہا کہ انہوں نے غزہ تک اور پورے غزہ میں جان بچانے والی انسانی امداد کی فراہمی کو مزید بڑھانے کے لیے کوششوں کو تیز کرنے پر تبادلۂ خیال کیا اور انسانی امداد پر قریبی رابطہ کاری جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں