غزہ میں جنگ بندی کے لیے امریکہ میں مظاہرے، روسی رابطوں کی تحقیقات کی جائیں: نینسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

امریکہ کے ایوان نمائندگان کی سابق سپیکر نینی پیلوسی نے غزہ میں جنگ بندی کے حق میں اور فلسطینیوں کی ہلاکتوں کے خلاف بڑھتے ہوئے احتجاج کے پیچھے روسی رابطوں کا شبہ ظاہر کیا ہے۔

ان مظاہروں کے بارے میں ان کا کہنا ہے کہ ' ایف بی آئی' کو تحقیقات کرنا چاہییں نیز اس چیز کو بھی دیکھا جانا چاہیے کہ جنگ بندی کا مطالبہ کرنے والوں کو فنڈنگ کہاں کہاں سے ہو رہی ہے۔

پیلوسی نے اس امر کا مطالبہ 'سی این این' کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کیا ہے۔ ان کا یہ انٹرویو ایسے موقع پر سامنے آیا ہے امریکہ میں جب صدر جو بائیڈن کی انتخابی مہم کی شروعات ہیں اور عوامی سطح پر اسرائیل کی غزہ میں جنگ کے حوالے سے جو بائیڈن انتظامیہ کی پالیسی زیر تنقید آ رہی ہے۔ سی این این کی طرف سے بھی پیلوسی سے پوچھا گیا کہ آیا غزہ میں جنگ کے بارے میں پالیسی ڈیموکریٹس کے لیے صدارتی انتخاب کو متاثر کرے گی؟

پیلوسی نے امریکہ میں مظاہرے کرنے اور غزہ میں جنگ بندی چاہنے والوں کو براہ راست روسی صدر سے جوڑتے ہوئے کہا 'ان کے لیے جنگ بندی کا مطالبہ مسٹر پیوتن کا پیغام ہے۔ مسٹر پیوتن کا پیغام۔' انہوں نے مزید کہا 'کوئی غلطی نہ کریں، یہ معاملہ براہ راست اس سے جڑا ہوا ہے جو وہ یعنی روسی صدر پوتن دیکھنا چاہتے ہیں۔'

تاہم انہوں نے فوراً ہی یہ بھی کہہ دیا 'میرے خیال میں ان میں سے کچھ مظاہرین وقتی طور پر سامنے آ گئے ہیں۔ ان میں کچھ قدرتی اور نامیاتی درجے میں آتے ہیں اور اپنے اخلاس کے سبب ایسا کر رہے ہیں۔ مگر کچھ ایسے ہیں جو روس سے جڑے ہوئے ہیں۔ اس لیے انہیں 'فنانسنگ' کی تحقیقات کی جانا چاہییں۔'

اگرچہ ایک ممتاز قانون دان اور ڈیموکریٹ لیڈر نے غزہ میں جنگ بندی کی بات کرنے والوں کو روسی صدر کے ایجنڈے اور مالی مدد کے ساتھ پہلی بار جوڑا ہے ۔ لیکن اب تک امریکہ کے تقریباً ہر بڑے شہر میں بشمول نیویارک اور واشنگٹن سے لے کر لاس اینجلس تک یہ مظاہرین فلسطینی بچوں اور عورتوں کی مسلسل اور اندھا دھند ہلاکتوں کے خلاف اور جنگ بندی کے حق میں آواز بلند کر چکے ہیں۔ ائیر پورٹس سے لے کر تمام بڑے شہروں کے چوراہوں پر بھی یہ مطالبہ امریکی انتظامیہ کے سامنے لایا جا چکا ہے۔

ان مظاہروں کو منظم کرنے والوں میں فلسطینی شہری ہی نہیں انسانی حقوق کی تنظیمیں حتیٰ کہ یہودی تنظیمیں تک شامل ہیں۔ ڈیمو کریٹک سینیٹر الیگزینڈریا اوکاسیو نے بھی اتوار ہی کے روز کہا ے کہ جنگ کی مخالفت خطے میں اندھا دھند ہلاکتوں کے سبب ہے۔ انہوں نے ایک سوال پر 'این بی سی' سے کہا ' ہم اس وقت جو پورے ملک میں دیکھ رہے ہیں امریکی نوجوان تشدد اور اندھی ہلاکتوں سے خوف زدہ ہو رہے ہیں۔'

واضح رہے کہ سات اکتوبر سے اب تک غزہ میں فلسطینی بچوں اور عورتوں کی واضح اکثریت کے ساتھ 26 ہزار 4 سو سے زائد فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ امریکہ اس کے باوجود جنگ بندی کے حق میں قرار دادوں کو ویٹو کر چکا ہے۔ اسی کے خلاف امریکہ میں احتجاجی مظاہرے بڑھتے جا رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں