پیرس، فرانس میں مشتعل کسانوں کا ٹریکٹروں سے گھیراؤ، 15,000 سکیورٹی اہلکار تعینات

فرانس کے مختلف شہروں سے 72 ہزار کسان مظاہروں میں شریک ہیں، فرانسیسی وزیر اعظم مظاہرین کو اپنی تحریک ختم کرنے پر قائل کرنے میں ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس میں منگل کے روز ہزاروں کی تعداد میں کسان اپنے مطالبات پر عمل درآمد میں ناکامی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ٹریکٹروں کے ساتھ دارالحکومت پیرس کے داخلی راستوں کا محاصرہ کرنے میں کامیاب ہو گئے، جب کہ فرانسیسی حکام نے مظاہرین پر قابو پانے کے لیے 15000 سکیورٹی اہلکاروں کی تعیناتی کا اعلان کیا ہے۔

کسانوں نے فرانسیسی پولیس کے سامنے پیرس کے شمال میں آرسی میں ایک ہائی وے کو بلاک کر دیا - ایسوسی ایٹڈ پریس
کسانوں نے فرانسیسی پولیس کے سامنے پیرس کے شمال میں آرسی میں ایک ہائی وے کو بلاک کر دیا - ایسوسی ایٹڈ پریس

مظاہرین بہتر اجرت اور کم ماحولیاتی ضوابط کا مطالبہ کر رہے ہیں، جو ان کے بقول ان کی روزی روٹی کو متاثر کر رہے ہیں۔

فرانسیسی کسانوں نے مہنگائی اور سستی درآمدات سے مسابقت کے خدشات پر حکومت کے ساتھ تعطل میں ٹریکٹروں کے ساتھ فرانس کے آس پاس کی بڑی موٹر ویز کو بند کر دیا ہے۔

پیر کے روز، کسانوں نے کہا کہ ان کا مقصد پیرس کی اہم سڑکوں پر آٹھ ناکے قائم کرنا ہے۔

احتجاج کرنے والے کسانوں نے گذشتہ جمعہ کو حکومت کی طرف سے اعلان کردہ اقدامات کو ناکافی کہتے ہوئے اپنی تحریک جاری رکھنے اور دارالحکومت کے گھیراؤ کی دھمکی دی تھی۔

ینگ فارمرز یونین کے سیکرٹری جنرل، جو بڑی کسانوں کی یونین ایف این ایس ای اے، نے اس ہفتے کے آغاز میں سڑکوں پر رکاوٹیں دوبارہ شروع کرنے کا اعلان کیا۔

فرانس کے مختلف شہروں سے تقریباً 72 ہزار کسان احتجاج میں شریک ہیں جب کہ فرانسیسی وزیر اعظم مظاہرین کو اپنی تحریک ختم کرنے پر قائل کرنے میں ناکام رہے۔

توقع ہے کہ فرانسیسی حکومت کسانوں کو مطمئن کرنے کے لیے آج کئی نئے اقدامات کا اعلان کرے گی۔

کسان تنظیموں کا کہنا ہے کہ کسان دوست منصوبوں کو مزید آگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔ بااثر کسانوں کی یونین ایف این ایس سی اے کے سربراہ نے کہا کہ ''لہذا ہم پیرس سے 30 کلومیٹر تک پیرس جانے اور جانے والی تمام اہم شاہراہوں کو روک دیں گے۔ ہمارا مقصد حکومت پر دباؤ ڈالنا ہے، تاکہ ہم فوری طور پر بحران سے نکلنے کا کوئی حل تلاش کر سکیں۔''

کم آمدنی اور ماحولیاتی پالیسیوں پر پورے یورپ میں، حالیہ ہفتوں کے دوران کسانوں کے بڑے پیمانے پر احتجاج دیکھنے میں آئے ہیں۔

اتوار کے روز، بیلجیئم کے کسانوں نے جنوبی بیلجیم میں ایک ہائی وے کو بند کر دیا، اور فرانس اور جرمنی میں ہونے والی احتجاجی تحریک کی طرح ایک تحریک میں شامل ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں