تُرک صدر طیب ایردوآن دس سال بعد اگلے ماہ مصر کا دورہ کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بلومبرگ نیوزایجنسی نے بدھ کے روز باخبرترک حکام کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ ترک صدر رجب طیب ایردوآن 10 سال سے زائد عرصے کے کشیدہ تعلقات کے بعد اگلے ماہ مصر کا دورہ کریں گے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ایردوآن اورمصری صدرعبدالفتاح السیسی کے درمیان ہونے والی بات چیت میں غزہ میں فلسطینیوں کوامداد کی ترسیل اور جنگ کے خاتمے کے لیے کیے جانے والے اقدامات پر توجہ مرکوز کیے جانے کی امید ہے۔

مصرمیں ترکیہ کے سفیر صالح موطلو نے کہا کہ دونوں صدور کے درمیان آئندہ سربراہی اجلاس میں غزہ کی جنگ کے حوالے سے تبادلہ خیال کیاجائے گا۔ انہوں نے "ایم بی سی مصر" کے پروگرام "ہاپنگ ان مصر" کے ساتھ خصوصی انٹرویو کے دوران اس بات پر زور دیا کہ ترکیہ فلسطینیوں کی نقل مکانی کی مخالفت پرمبنی مصری موقف کی حمایت کرتا ہے۔ ترکیہ بھی فلسطینیوں کی جبری نقل مکانی کے خلاف ہے۔

قاہرہ میں ترکیہ کے سفیر نے مزید کہا کہ ایک آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کے ذریعے فلسطین میں پائیدار امن و سلامتی کا قیام ضروری ہے اور جلد از جلد جنگ بندی ہونی چاہیے۔

صدر السیسی نے گذشتہ ستمبر میں بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں G20 سربراہی اجلاس کے موقع پر اپنے ترک ہم منصب ایردوآن سے ملاقات کی تھی۔

دونوں صدور نے تعلقات اور تعاون کو مضبوط بنانے، دونوں ممالک کے درمیان سفارتی تعلقات کو اپ گریڈ کرنے اور سفیروں کے تبادلے پر اتفاق کیا تھا۔

قاہرہ اور انقرہ کے درمیان 2013 میں سابق صدر محمد مرسی کی معزولی کے بعد سفارتی تعلقات منقطع ہوگئے تھے۔ دونوں ملکوں کے درمیا10 سال بعد سفارتی تعلقات بحال ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں