اسرائیل آئی سی جے کے فیصلے کو نظر انداز کر رہا ہے: جنوبی افریقہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

جنوبی افریقہ کے وزیرِ خارجہ نے الزام لگایا کہ غزہ میں چند دنوں میں مزید سینکڑوں شہریوں کو مار کر اسرائیل نے اقوامِ متحدہ کی اعلیٰ ترین عدالت کے گذشتہ ہفتے کے فیصلے کو نظر انداز کیا ہے جس نے حکم دیا تھا کہ اسرائیل ہلاکتوں کو روکنے کے لیے ہر ممکن کوشش کرے۔

غزہ کی وزارتِ صحت نے کہا ہے کہ 150 سے زائد افراد جاں بحق اور 313 مزید زخمی ہوئے جب اسرائیلی فوج نے بدھ کے روز علاقے کے شمالی حصے میں مزاحمت کاروں سے لڑائی جاری رکھی جو غزہ کی پٹی میں اسرائیل کی زمینی کارروائی کا ابتدائی ہدف تھا اور وہاں پورے کے پورے محلے منہدم ہو گئے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ اس کی افواج نے گذشتہ روز شمالی غزہ میں حماس کے 15 سے زائد مزاحمت کاروں کو ہلاک کیا اور ایک اسکول میں ان کے بنیادی ڈھانچے کو نشانہ بنایا۔

حماس کے زیرِ قبضہ علاقے کی وزارتِ صحت کے مطابق اسرائیل کی تازہ ترین جارحیت سے جاں بحق فلسطینیوں کی تعداد 26,900 ہو گئی ہے۔ اس میں سویلین اور مزاحمت کاروں کی ہلاکتوں میں فرق نہیں ہے لیکن اس نےکہا ہے کہ جاں بحق ہونے والوں میں زیادہ تر خواتین اور بچے تھے۔

اسرائیلی حکام کے مطابق حماس کے 7 اکتوبر کو جنوبی اسرائیل میں حملے میں 1,200 افراد ہلاک ہوئے جن میں زیادہ تر عام شہری تھے اور تقریباً 250 افراد کو یرغمال بنایا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں