امریکی فوج کا یمن میں ڈرونز کنٹرول سٹیشن پر حملہ، ڈرونز تباہ کر دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی فوج نے کہا ہے کہ یمن میں 10 حملہ آور ڈرونز اور ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں سے تعلق رکھنے والے ایک زمینی کنٹرول سٹیشن کو فضائی حملوں میں نشانہ بنایا گیا ہے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق امریکی سینٹرل کمانڈ (سینٹکام) کے ایک بیان میں کہا گیا کہ حملوں میں ’حوثی ڈرون کنٹرول گراؤنڈ سٹیشن اور 10 حوثی ڈرونز کو نشانہ بنایا گیا جو ’خطے میں تجارتی جہازوں اور امریکی بحریہ کے بحری جہازوں کے لیے ایک فوری خطرے کا باعث بن رہے تھے۔‘

دوسری جانب امریکہ نے اردن میں تین فوجیوں کی ڈرون حملے میں مارے جانے کی ذمہ داری ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا پر عائد کی ہے۔

امریکی الزام کے مطابق یہ گروپ عراق میں سرگرم ہے اور اس کو ایران کی حمایت حاصل ہے جس نے اردن میں امریکہ کے فوجی اہلکاروں کو ڈرون سے نشانہ بنایا تھا۔

امریکہ کی جانب سے تہران کو ذمہ دار ٹھہرانے کے بعد ایران نے خبردار کیا ہے کہ وہ کسی بھی امریکی حملے کا ’فیصلہ کن جواب‘ دے گا۔ امریکہ نے اشارہ دیا ہے کہ وہ اتوار کے ڈرون حملے کے تناظر میں مشرق وسطیٰ میں جوابی حملوں کی تیاری کر رہا ہے۔

شمال مشرقی اردن میں ایک خفیہ اڈے پر حملے میں 20 امریکی فوجی زخمی بھی ہوئے تھے۔

قومی سلامتی کونسل کے ترجمان جان کربی نے کہا کہ امریکہ کا خیال ہے کہ یہ حملہ عراق میں اسلامی مزاحمتی گروپ کی طرف سے منصوبہ بندی، وسائل اور سہولت کاری سے کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں