دنیا کی مملکتیں اسرائیلی فوج کی مالی امداد روکیں: جنوبی افریقہ کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

جنوبی افریقہ نے اسرائیلی فوج کو مدد دینے والی دنیا بھر کی مملکتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ اسرائیلی فوج کو فنڈنگ کرنا بند کر دیں۔ یہ مطالبہ جنوبی افریقہ کے وزیر خارجہ نیلیڈی پانڈور نے اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کی نسل کشی سے متعلق بین الاقوامی عدالت انصاف کے حالیہ فیصلے کی روشنی میں بدھ کے روز کیا ہے۔

بین الاقوامی عدالت انصاف نے پچھلے ہفتے جنوبی افریقہ ہی کے ایک دائر کردہ مقدمے میں فیصلہ دیا تھا۔ عدالت انصاف نے اسرائیل کو یہ حکم دیا ہے کہ وہ اپنے فوجیوں کو غزہ میں فلسطینیوں کے خلاف نسل کشی کے ارتکاب سے روکنے کے لیے اپنی طاقت (حکومتی اختیار) کے مطابق اقدامات کرے۔ البتہ اسرائیل نسل کشی کے اقدامات کی تردید کرتا ہے۔

بین الاقوامی عدالت انصاف نے اس سلسلے میں اسرائیل سے ایک ماہ کے اندر ایک رپورٹ بھی طلب کی ہے تاکہ عدالت دیکھ سکے کہ اس دوران اسرائیل نے فلسطینیوں کی نسل کشی روکنے کے لیے کیا اقدامات کیے ہیں۔

تاہم اس فیصلے کے بعد زمین پر کوئی تبدیلی ابھی دیکھنے کا انتظار ہے۔ البتہ اسی دوران امریکہ نے اعلان کیا ہے کہ وہ اسرائیل کی فوج کو اسلحے کی فراہمی رونے کی کسی تجویز کی تردید کی ہے۔

جنوبی افریقہ جس نے اسرائیلی فوج کی امداد روکنے اور دنیا کے ملکوں کو اسرائیل کی سہولت کاری کو روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔ وہ شروع سے ہی فلسطین پر اسرائیلی قبضے اور اسرائیل کے نسل پرستانہ حربوں کے خلاف موقف رکھتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں